مقبول خبریں
دی سنٹر آف ویلبینگ ، ٹریننگ اینڈ کلچر کے زیر اہتمام دماغی امراض سے آگاہی بارے ورکشاپ
پارٹی رہنما شعیب صدیقی کو پاکستان تحریک انصاف پنجاب کا سیکریٹری جنرل بننے پر مبارک باد
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت جولائی میں برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز،سیمینارز منعقد کریگی
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
اوورسیز پاکستانیز ویلفیئر کونسل کا وسیم اختر چوہدری اور ملک ندیم عباس کے اعزاز میں استقبالیہ
مسئلہ کشمیر کو برطانیہ و یورپ میں اجاگر کرنے پر تحریکی عہدیداروں کا اہم کردار ہے: امجد بشیر
جس لڑکی نے خواب دکھائے وہ لڑکی نابینا تھی!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
آرمڈ فورس سپیشل پاورز ایکٹ کے جیسے ڈراکونین قانون کے تحت بھارتی فوج کسی کو جوابدہ نہیں: محمد فیض
لندن ... بھارت کے زیر قبضہ کشمیر کی صورتحال انتہائی سنگین ہے، بھارتی فوج آزادی کی آواز کودبانے کیلئے ظلم کاہر حربہ آزما رہی ہے۔ بھارتی فوجی لوگوں کوکچلنے کیلئے عصمت دری ،آتشزنی اور دیگر حربے اختیار کررہے ہیں، ان خیالات کا اظہار جے کے ایل ایف کے لندن برانچ کے صدر محمد فیض نے برطانوی پارلیمنٹ میں نیشنز ودآئوٹ سٹیٹس کے زیر اہتمام دولت مشترکہ میں شامل ممالک کی چھوٹی اقوام کے حق خود اختیاری اور حقوق انسانی سے انکار کے زیر عنوان سیمینار میں تقریرکرتے ہوئے کیا۔ انھوں نے کہا کہ آرمڈ فورس سپیشل پاورز ایکٹ کے جیسے ڈراکونین قانون کے تحت بھارتی فوج کو مکمل اختیار دے دیاگیا ہے اس قانون کے تحت وہ اپنے کسی بھی گھنائونے اور شرمناک جرم کیلئے جوابدہ نہیں ہیں، انھوں نے کہا کہ ’’ اقوام بے ملک‘‘ نامی یہ تنظیم آزادی کے حصول تک ہمیں بولنے اور ایک ساتھ چلنے کیلئے ایک بہت بڑا پلیٹ فارم ہے، اقوام بے ملک نامی تنظیم کے بانی رکن جگدیش سنگھ نے اپنی تقریر میں جے کے ایل ایف کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ یہ کشمیر کے اتحاد اور مکمل آزادی کیلئے جدوجہد کرنے والی منقسم جموں وکشمیر کی واحد ملکی تحریک ہے۔ دیگر مقررین میں ڈاکٹر جواد ملام گراہام ولیم صنم ،یوگالنگم ،سوکالنگم، برنارڈ ڈیوب، محراب بلوچ ،حکیم واڈھیلہ، لاکھو لوہانہ ، ڈورس جونز اور رابرٹ تمانجی جیسی معروف شخصیات شامل تھیں۔