مقبول خبریں
دار المنور گمگول شریف سنٹر راچڈیل میں جشن عید میلاد النبیؐ کے حوالہ سےمحفل کا انعقاد
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
راچڈیل میں قاری عبدالحمید کے بیٹے کی دستار بندی کی تقریب ، پیر نورالعارفین کا خصوصی خطاب
راچڈیل: تعلیم ہر انسان چاہے وہ امیر ہو یا غریب ،مرد ہو یا عورت ، اس کی بنیادی ضرورت میں سے ایک ہے یہ انسان کا حق ہے جو کوئی اس سے نہیں چھین سکتا اگر دیکھا جائے تو انسان اور حیوان میں فرق تعلیم ہی کی بدولت ہے تعلیم کسی بھی قوم یا معاشرے کےلئے ترقی کی ضامن ہے یہی تعلیم قوموں کی ترقی اور زوال کی وجہ بنتی ہے تعلیم حاصل کرنے کا مطلب صرف سکول ،کالج یونیورسٹی سے کوئی ڈگری لینا نہیں بلکہ اسکے ساتھ تہمیز اور تہذیب سیکھنا بھی شامل ہے دور حاضر میں دنیاوی تعلیم کیساتھ کیساتھ بچوں کی دینی تعلیم کی اہمیت اور ضرورت اور بھی بڑھ گئی ہے۔ برطانیہ میں موجود مدرسے دینی تعلیم کی تمام ضرورتوں کو پورا کر رہے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار آستانہ عالیہ نیریاں شریف کے سجادہ نشین پیر نور العارفین نے راچڈیل کی مقامی مسجد میں دستار بندی کے حوالے سے منعقدہ تقریب میں خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیاان کا مزید کہنا تھا کہ والدین کو بچوں کو نہ صرف دینی تعلیم دینی چاہیے بلکہ پھر اس دینی تعلیم پر عمل پیراء ہونے تک کڑی نظر بھی رکھنی چاہیے بہت سے نوجوان بچے قرآن حفظ کر کے بھول جاتے ہیں جو کہ انتہائی نامناسب فعل ہے۔ انھوں نے سنٹر کے مہتمم مولاناقاری عبدالحمید کی کاوشوں کو سراہتے ہوئے کہا کہ نوجوان بچوں اور بچیوں کی تعلیم اور تربیت میں ایسے سنٹرز کلیدی کردار ادا کر رہے ہیں اور برطانیہ میں دین اسلام کی ترویج کا یہ سلسلہ جاری رہنا چاہیے۔البدر سنٹر راچڈیل میں ناظرہ اور حفظ القرآن کی تکمیل کے حوالے سے دستار بندی کی تقریب کا انعقاد کیا گیا جس میں حافظ عبدالوقاص کی دستار بندی بدست پیر نور العارفین کی گئی۔ تقریب میں کثیر تعداد میں مقامی افراد نے شرکت کی اور البدر سنٹر کی دین اسلام کے لیے کی جانے والی کاوشوں کو سراہا ۔ اس موقعہ پر مولانا کا کہنا تھا کہ مجھے خوشی ہے کہ میرے بیٹے نے قرآن حفظ کیا ہے تمام والدین اگر دنیاوی تعلیم کیساتھ بچوں کی دینی تعلیم پر بھی توجہ دیں تو معاشرے کو ایک بہترین انسان دے سکتے ہیں جو کہ آئیندہ نسلوں کی تعلیم و تربیت بہتر طریقے سے کر سکتا ہے۔ بنیادی عصری تعلیم ،ٹیکنیکل تعلیم،انجینئرنگ ،وکالت ،ڈاکٹری اور مختلف جدید علوم حاصل کرنا آج کے دور کا لازمی تقاضہ ہے جدید علوم کی ضرورت اور اہمیت کیساتھ دور حاضر میں اسلام کے مثبت تشخص کو اجاگر کرنے کے لیے دینی تعلیم کی اہمیت اور ضرورت اور بھی بڑھ گئی ہے۔ ایسے میں والدین کی یہ ذمہداری ہے کہ وہ بچوں کی دینی تعلیم پر خصوصی توجہ دیں۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر