مقبول خبریں
دار المنور گمگول شریف سنٹر راچڈیل میں جشن عید میلاد النبیؐ کے حوالہ سےمحفل کا انعقاد
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
پاکستان مادر وطن ہے اسکی حفاظت ہمارا فرض اولین ہے: ڈی جی آئی ایس پی آر آصف غفور
لندن (خصوصی رپورٹ: اکرم عابد) دنیا کے بڑے ممالک ایشوز پر ایک دوسرے سے ملنے سے گریز کرتے ہیں پاکستان واحد ملک ہے جو بھارت، چین، افغانستان، قطر اور سعودی عرب سمیت سبھی ممالک سے ملتا ہے اور بات چیت کرتا ہےافواج پاکستان سی پیک کا محافظ ادارہ ہے. ان خیالات کا اظہار ڈائیریکٹر جنرل آئی ایس پی آر میجر جنرل عبدالغفور نے لندن میں ایک میڈیا بریفنگ میں کیا انکا کہنا تھا کہ فوج اور عدلیہ سمیت سبھی اداروں کو ملکی استحکام کی خاطر سیاسی حکومتوں کا ساتھ دینا چاہیئےانہوں نے کہا کہ دورہ برطانیہ میں پروفیشنل امور کے علاوہ پاکستان کی بہتری کی بات ہوئی کیونکہ بطور ادارہ پاکستان کا امیج بلند کرنا ہمارا فرض اولین ہے. آئی ایس پی آر کے ڈی جی کا کہنا تھا کہ پاکستان میں صرف خرابیاں نہیں بلکہ اچھائیاں زیادہ ہیں جو دنیا کو بتانا ضروری ہیں دہشت گردی کے خاتمے کیلئے جتنی قربانیاں ہم نے دیں وہ کسی اور نے نہ دیں اس جنگ میں ہم نے 76 ہزار افراد کی قربانیاں دیں جن میں اکثریت عوام کی ہے. انہوں نے کہا کہ پاکستانی عوام کو وہ وقت نہیں بھولنا چاہیئے جب کراچی کبھی کرائم ریٹ میں چھٹے نمبر پر تھا آج 66ویں پر ہے. ایک سوال کے جواب میں انکا کہنا تھا کہ وقت بتائے گا کہ حالیہ الیکشن پاکستان کی تاریخ کے شفاف ترین تھے غلطیاں ہم میں بھی ہوئی ہونگی مگر ملک کے لئے جانیں دینے کے لئے گریز نہیں کرتے فوجیوں کے سر کاٹ کر فٹ بال کھیلا گیا ان کی بھی بچے ہیں قربانی دینے سے کوئی سپاہی گریز نہیں کرتا. میجر جنرل آصف غفور کا کہنا تھا کہ پاکستان دنیا کا واحد ملک ہے جس نے دہشت گردی کے خلاف جنگ جیتی ، افغا نستان میں امن ہو گا تو کے پی کے میں چیک ہوسٹیں ختم کر دیں گے. ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا آج کی فوج بہت مختلف ہے جس میں ہر جنرل نے خود ہتھیار اٹھا کر جنگ لڑی، پرویز مشرف کے سیاسی فیصلوں سے فوج کا کوئی تعلق نہیں. افواج پاکستان کے ترجمان کا کہنا تھا کہ کچھ عناصر جھوٹے پروپیگنڈے سے سوشل میڈیا پہ فوج کو بدنام کرتے ہیں صحافیوں کا فرض ہے کہ فوج سے متعلق متنازعہ خبروں کی تصدیق کرلیا کریں. بھارت سمیت پاکستان مخالف ممالک چاہتے ہیں کہ ہمیں معاشی طور پہ کمزور کردیا جائے، سیاست کو قومی مفاد پر کسی صورت ترجیح نہیں دینی چاہیئے. ایک سوال کے جواب میں انکا کہنا تھا پاکستان معاشی مشکلات کا شکار ضرور ہے لیکن ہمیں مل جل کر ان مشکلات سے نکلنا ہے موجودہ خسارے سے نبٹنے کیلئے ہمیں فوری طور پر تین بلین ڈالر چاہئیں افواج پاکستان کے بجٹ پر بھی غلط تنقید ہوتی ہے. اس بجٹ کا 95 فیصد تنخواہوں اور شہدا کی فیمیلیز کی دیکھ بھال پہ خرچ ہوتا ہے اس بجٹ سے 9 لاکھ حاضر سروس اور 36 ملین ریٹائیرڈ فوجیوں کی دیکھ بھال پہ خرچ ہوتا ہے. یہ وہی فوجی ہیں جو جان ہتھیلی پہ رکھ کر وطن اور عوام کی خدمت کرتے ہیں فوجی فائونڈیشن جیسے ادارے مالی منعفت کے بجائے اخراجات پورے کرنے کیلئے چلائے جارہے ہیں. مسنگ پرسنز کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں انکا کہنا تھا مسنگ پرسنز کے ایشو پر بھی غلط بیانی سے کام لیا جاتا ہے ایسے افراد ضرور ہیں لیکن کوئی انکی لسٹیں فراہم نہیں کرتا دہشت گردی میں مارے جانے والے اور دیگر ممالک میں جہاد پر جانے والے بھی تو مسنگ پرسنز ہی ہیں.