مقبول خبریں
جموں کشمیر نیشنل عوامی پارٹی برطانیہ برانچ کے زیرِ اہتمام فکر مقبول بٹ شہید ورکز یونیٹی کنونشن کا انعقاد
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
ہم دھوپ میں بادل کی، درختوں کی طرح ہیں!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مظہر اسلم منصور احمد کائلو ، خالد محمود، شاہد محمود کی عارف علوی کو صدر پاکستان بننے پر مبارکباد
مانچسٹر:برطانیہ کے ماہر قانون دان سالیسٹرز مظہر اسلم منصور احمد کائلو ، خالد محمود، شاہد محمود نے مشترکہ طور پر اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ نئے صدر کو خوش آمدید کرنا چاہیےعارف علوی ایک فعال ،پُرعزم صدر کے طور پر نظر آسکتے ہیں،وہ ایک اچھے اور منفرد صدر ثابت ہوں گے ،تحریک انصاف نے الیکشن کے بعد جو فیصلے کیے ہیں اُس میں ایک عارف علوی کا فیصلہ بھی میرٹ پر ہوا ہے، صدارت کا مل جانا تحریک انصاف کے لئے بڑی خوش آئندبات ہے، وفاقی حکومت کی ضروری شکل مکمل ہو گئی اب مسائل حل ہونے چاہیں۔ ان خیالات کا اظہار معروف قانو ن دان سالیسٹر فورم وائیٹ فیلڈ سالیسٹر میں انہوںنے گفتگو کرتے ھوےکیا اور کہا کہ نئے صدر کو خوش آمدید کرنا چاہیے تحریک انصاف کو ایک اور کامیابی ملی ہے صدر اور وزیراعظم اُن کا ہے صدرِ پاکستان چھوٹی اکائیوں کو ساتھ لے کر چلیں بلوچستان سندھ اور خیبرپختونخوا کے دورے کریں مسلسل فیڈریشن کی علامت بنیں اور ساتھ ہی ساتھ اپنی پارٹی کا جو ایجنڈا ہے اُس کو آگے لے کر جانے میں اپنے وزیراعظم کی مدد کریں قوم کو کسی سازشی یا خوشامدی صدر کی ضرورت نہیں ایک آئینی صدر کی ضرورت ہے عارف علوی مڈل کلاس سے تعلق رکھتے ہیں سیاسی راستے سے صدر بنے ہیں وہ ایک اچھے صدر ثابت ہوں گےاپوزیشن اگراپنا صدر بنا لیتی تو آج پی ٹی آئی کی کارکردگی پر سوال اٹھنے شروع ہوجاتے ظاہر ہے پھر پیپلز پارٹی اور ن لیگ جا کے ایون صدر میں بیٹھ جاتیں وہ کوئی اچھا نقشہ نہ ہوتا یہ نقشہ بہترین ہے ایک بہتر حکومت چلانے کے لئے،غربت دور کرنا ظاہر ہے صدر کے آئینی اختیار میں نہیں ہے لیکن وہ عمران خان کی مدد کرسکتے ہیں اپنے رول سے ہٹ کر ذاتی مشورے دے سکتے ہیں لیکن صدر کے طور پر آئینی اختیار میں رہ کر ہی کام کرنا پڑے گا۔ عارف علوی سے یہ توقع نہیں ہے کہ وہ اپنی حدود سے آگے بڑھیں گے ۔ جس طرح وہ کہہ رہے ہیں کہ غربت مٹانی چاہیے وہ عمران خان کو تو یہ مشورہ دیں لیکن خود غربت مٹانے کے لئے نا نکلیں کیونکہ یہ صدر کاآئینی اختیار نہیں ہے ۔انہون نے مزید کہا کہ تحریک انصاف کے لئے خوش آئندبات ہے کہ اب اُن کے پاس صدارت بھی ہے پاکستان کے اصل مسائل نے سر اٹھانا ہیں جو درحقیقت تحریک انصاف کے لئے بہت بڑے چیلنج ہیں جن کے انہیں جواب ڈھونڈنے ہیں۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر