مقبول خبریں
مسرت چوہدری اور اختر چوہدری کا لارڈ مئیر عابد چوہان کے اعزاز میں ظہرانہ
پاکستان پریس کلب یوکے کے سالانہ انتخابات اور تقریب حلف برداری
چیئرمین پی آئی ایچ آرچوہدری عبدالعزیز کوسوک ایوارڈ فار کمیونٹی سروسز سے نواز گیا
برطانوی شاہی جوڑے کی پاکستان میں زبردست پذیرائی، وزیر اعظم اور صدر مملکت سے ملاقاتیں
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
اسرار احمد راجہ کی کتاب کی تقریب رونمائی ،مئیر آف لوٹن کونسلر طاہر ملک ودیگرافراد کی شرکت
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
ہر انسان کو اس کے مذہب کے مطابق تدفین کی اجازت ملنی چاہئے: سعیدہ وارثی و دیگر
Corona virus
پکچرگیلری
Advertisement
آج ہم پاکستان کے شہدا کی وجہ سے آزادانہ زندگی گزار رہے ہیں:کونسلر احمد شہزاد
لندن:ہیومن رائٹس سوسائٹی آف پاکستان کے چیئرمین کونسلر احمد شہزاد او بی ای نے اپنے ایک بیان میں پاکستان ڈیفنس ڈے پر پاکستان کے شہدا کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان کے شہدا اور محافظوں کی قربانیوں کی وجہ سے آج ہم آزادانہ پر سکون زندگیاں گزار رہے ہیں،انہوں نے کہا کہ وہ ان محافظوں اور شہدا کو سلام پیش کرتے ہیں اور وہ خدا سے دعا گو ہیں کہ ان کو جنت الفردوس عطا فرمائے،کونسلر احمد شہزاد نے مزید کہا کہ وہ اپنے استاد فوجی 12اور17پنجاب کے جوانوں اور آفیسرز کو خصوصی طور پر خراج تحسین پیش کرنا چاہتے ہیں کو لاہور سیکٹر برکی کے مقام پر نہر کے پل کے قریب دشمن کے1965کی جنگ میں حملے کو پانچ روز تک روکے رکھنے کے سبب شہادت نوش کر کے جن میں مشہور و معروف پاکستان کے ہیرو میجر عزیز بھٹی شہید شامل تھے جنہوں نے اپنی17پنجاب کی ایڈوانس یونٹ کو فرنٹ سے لیڈ کر کے دشمن کو پانچ رات تک مزید مدد پہنچتے تک روکے رکھا اور11ستمبر1965کو دشمن کے ٹینک کے گولے سے شہدات نوش فرمائی،احمد شہزاد نے کہا کہ میجر عزیز بھٹی شہید میرے استاد تھے جنہوں نے ہماری ٹریننگ کے دوران ہمارے ساتھ شفقت اور اپنے بچوں جیسا سلوک کیا تھا،ان کے اخلاق کو وہ عمر بھر نہیں بھولیں گے۔احمد شہزاد نے بتایا کہ17پنجاب کے فوجیوں نے میجر عزیز بھٹی کی کمان کے نیچے مزید مدد پہنچنے تک دشمن کو روکے رکھا جس سے ہماری فوج کو پیادہ فوج ،ہوائی،ٹینکوں کے مشترکہ جوابی حملہ کرنے کا موقع مل گیا جس سے دشمن کا زبردست نقصان ہوا اور وہ اپنا جنگی سامان چھوڑ کر الٹے پائوں بھاگ نکلا،انہوں نے کہا کہ مجھے یاد ہے کہ ہم نے بچھلے چار دنوں میں دن رات سینکڑوں گولے دشمنوں پر برسائے سو ہمیں کئی بار توپوں کی بیرل بدلنی پڑی جس سے دشمن کا بھاری نقصان ہوا جس نے دشمن کو پسپا ہونے پر مجبور کر دیا،میں اپنے شہدا کو سلام پیش کرتا ہوں،پاک فوج زندہ باد،پاکستان پائندہ باد۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر