مقبول خبریں
راچڈیل مساجد کونسل کی طرف سے مئیر کونسلر محمد زمان کی مئیر چیرٹیز کیلئے فنڈ ریزنگ ڈنر کا اہتمام
اوورسیز پاکستانیوں کے لئے خصوصی سیل بنایا جانا چاہئے: سلیم مانڈوی والا
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
برطانیہ میں آباد تارکین وطن کی مسئلہ کشمیر پر کاوشیں قابل تحسین ہیں:چوہدری محمد سرور
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
کشمیریوں کو ان کا حق دیئے بغیر خطے میں پائیدار امن کا حصول ممکن نہیں: راجہ نجابت حسین
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
برطانیہ میں مقیم کشمیری و پاکستانی 16مارچ کو بھارت کے خلاف مظاہرہ کریں گے: راجہ نجابت حسین
وہ بے خبر تھا سمندر کی بے نیازی سے!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت کا برطانیہ و یورپ میں کشمیر کانفرنسز کے انعقاد بارے اجلاس
مانچسٹر:جموں کشمیر اگلے تین ماہ میں برطانیہ اور یورپ میں پانچ عالمی کانفرنسز منعقد کرے گی جس کیلئے برطانوی اور یورپی پارلیمنٹ میں قائم کشمیر گروپس معاونت کریں گے جبکہ برطانیہ اور یورپ سے چار پارلیمنٹری،نوجوانوں اور خواتین کے وفود ریاست جموں کشمیر کے دونوں اطراف کا دورہ بھی کریں گے،برطانیہ میں ہونیوالی اکثریت تقر یبات ٹائون ہالوں اور پارلیمنٹ میں ہونگی جنہیں تحریک کی خواتین،نوجوان اور کونسلرز آرگنائزر کریں گے،تحریک حق خود ارادیت انٹرنیشنل کے عہدیداران اقوام متحدہ کے اجلاسوں میں جنیوا اور نیویارک بھی جائیں گے اور پاکستان و آزاد کشمیر کی حکومتوں کے علاوہ بیرون ملک پاکستانی سفارتکاروں سے بھی بھرپور معاونت کی جائے گی جس کیلئے راجہ نجابت حسین،کونسلر عاصم رشید،کونسلر یاسمین ڈار،ثمینہ خان اور یوتھ پارلیمنٹ کی ممبر مسز دلفہ احمد اور نائلہ شریف پر مشتمل کمیٹی قائم کر دی گئی ہے،پاکستان کے حالیہ انتخابات میں پاکستان تحریک انصاف کی نئی حکومت کو مبارکباد دیتے ہوئے ان سے توقع کرتے ہیں کہ وہ تحریک آزادی کشمیر کو سفارتی محاذ پر منظم کریں گے اور بھارت سے مذاکرات کے علاوہ مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ میں بھی اٹھائیں گے،ان خیالات کا اظہار جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے خصوصی مشاورتی اجلاس تحریک کے سربراہ راجہ نجابت حسین کی صدارت میں مقامی ریسٹورنٹ میں ہوا جس میں برطانیہ کی چیئر پرسن کونسلر یاسمین ڈار،مرکزی سیکرٹری جنرل محمد اعظم،برطانیہ کے وائس چیئرمین امجد حسین مغل،مرکزی ڈائریکٹر انتظامیہ ہیری بوٹا،گریٹر مانچسٹر روبینہ خان،ثمینہ خان،نائلہ شریف،پامیلا اشرف،پروفیسر امتیاز احمد،رٹس میکڈرمٹ،گراہم میکڈرمٹ،ماجد خان،خالد محمود،احسان امجد اور یوتھ پارلیمنٹ کے ارکان مزدلفہ احمد،ارقم الحدید نوجوان رہنمائوں مومن خان،رافع متین اور نارتھ ویسٹ کونسلرز فورم کے چیئرمین کونسلر عاصم رشید شامل تھے،تحریک کے سربراہ راجہ نجابت حسین نے تحریکی عہدیداروں،خواتین رہنمائوں اور نوجوانوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے مستقبل کے پروگراموں کے بارے میں بریفنگ دی جبکہ حالیہ دنوں میں مختلف شہروں کی تقریبات اور ممبران پارلیمنٹ سے رابطوں کو نہ صرف تحریک آزادی کشمیر کیلئے فال قرار دیا بلکہ کہا کہ ہماری تنظیم برطانیہ اور یورپ میں واحد لابی گروپ ہے جس نے ہر مکتبہ فکر کو ساتھ لے کر جس پالیسی کا آغاز کیا تھا اس کے دورس نتائج نکل رہے ہیں جس کیلئے ہم نے طے کیا ہے کہ اگلے تینوں ماہ میں ہونے والی ہر تقریب کو نوجوان اور خواتین کی لیڈر شپ میں آرگنائز کیا جائے گا جس کیلئے برطانوی اور یورپی پارلیمنٹ کے بیس ارکان،حکومت آزاد کشمیر کے وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر خان،صدر ریاست سردار مسعود خان،حریت کانفرنس آزاد کشمیر کی قیادت جبکہ مختلف ممالک خاص کر لندن اور برسلز میں پاکستانی مشن کے نمائندوں نے بھی معاونت کی یقین دہانی کرائی ہے،انہوں نے کہا کہ تحریک اپنی تمام تر توانائیاں،بیرون ملک مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں سے عالمی اداروں،ممبران پارلیمنٹ اور سیاسی پارٹیوں کی قیادت تک پہنچانے میں صرف کرے گی اور جنیوا میں اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کے سربراہ کی14جون کی رپورٹ سےبھی ہر سطح پر پہنچائیں گے اسی طرح مقبوضہ کشمیر میں بھارتی سپریم کورٹ کے ذریعے آبادی کا تناسب بدلنے کی بھارتی کوششوں سے بھی عالمی رہنمائوں تک ممبران پارلیمنٹ کے ذریعے آگاہ کریں گے،برطانوی پارلیمنٹ میں آل پارٹیز کشمیر پارلیمنٹری گروپ اور یورپی پارلیمنٹ میں فرینڈز آف کشمیر گروپ کے تمام عہدیداروں کا بھی اجلاس میںں بھرپور تعاون پر شکریہ ادا کرتے ہوئے اس عزم کا اظہار کیا گیا کہ نئی پاکستانی حکومت دونوں گروپس اور تحریک آزادی کشمیر کے سفارتی محاذ پر متحرک تنظیموں کو اعتماد میں لے کر بیرون ملک کشمیر پر لابی کرے گی،اس موقع پر مقبوضہ کشمیر میں جاری تحریک حریت کو ہر سطح پر معاونت کی بھی یقین دہانی کروائی گئی۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر