مقبول خبریں
مئیر کونسلر جاوید اقبال نےرضاکارانہ خدمات پرتنظیم وائی فائی کو تعریفی سرٹیفکیٹ اور شیلڈ سے نوازا
پیپلزپارٹی کے رہنما ندیم اصغر کائرہ کی پریس کانفرنس ،صحافیوں کے سوالات کے جوابات دیئے
واجد خان ایم ای پی کا آزاد کشمیر سے آئے حریت کانفرنس کے رہنمائوں کے اعزاز میں عشائیہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے زیر اہتمام پہلی کشمیر کلچرل نمائش کا اہتمام
دسمبر بے رحم اتنا نہیں تھا!!!!!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
افغانستان میں خواتین کے حقوق کی حمایت کرتے رہیں گے،بیرونس وارثی
لندن ۔فارن آفس کی سینئر منسٹر بیرونس سعیدہ وارثی نے برطانیہ کی جانب سے افغانستان میں خواتین کے حقوق کی حمایت جاری رکھنے کی یقین دہانی کرائی ہے، ایمنسٹی یوکے کے نوجوان کارکنوں سے ملاقات کے دوران انھوں نے افغانستان میں خواتین کے حقوق اور اس ملک کو زیادہ خوشحال اور مستحکم بنانے میں ان کے کردار پر تبادلہ خیالات کیا۔ انھوں نے ایمنسٹی اور جینڈر ایکشن فار پیس اینڈسیکورٹی کی جانب سے ایک پٹیشن بھی وصول کی جس میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ برطانیہ افغان خواتین کی مدد جاری رکھے، پٹیشن کا خیر مقدم کرتے ہوئے بیرونس وارثی نے افغان خواتین کے حقوق کے تحفظ اور فروغ کیلئے سول سوسائٹی کی تنظیموں کی جدوجہد کی تعریف کی اور برطانیہ کی جانب سے ان کے، افغان حکومت اور دوسرے پارٹنرز کے ساتھ طویل المیعاد بنیادوں پر کام جاری رکھنے کی یقین دہانی کا اعادہ کیا۔ بیرونس وارثی نے کہا کہ مجھے فخر ہے کہ برطانیہ کے نوجوان بھی افغان معاشرے میں خواتین کے مساوی مقام کیلئے افغان نوجوانوں کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ ایمنسٹی جیسی تنظیمیں اس بات کو یقینی بنانے کیلئے اب افغان خواتین کی آواز کبھی بھی دبائی نہ جاسکے شاندار کام کر رہی ہیں۔ برطانیہ مکمل طور پر افغانستان کے ساتھ کھڑا ہے اور ہمارا یہ ساتھ 2014 میں افغانستان سے برطانوی افواج کی واپسی کے ساتھ بھی جاری رہے گا اور ہم آنے والے چیلنجوں اور مواقع کا سامنا کرنے کیلئے افغان خواتین اور لڑکیوں کی مدد کرتے رہیں گے، انھوں نے کہا کہ خواتین افغانستان کے مستقبل کی تعمیر میں اہم کردار ادا کرسکتی ہیں اور انھیں اپنا یہ کردار ادا کرنا چاہئے۔ بات چیت کے دوران افغان خواتین کو پیش آنے والی مشکلات اور ان پر بڑے پیمانے پر تشدد کی صورت حال بھی زیر غور آئی۔ بیرونس وارثی نے ملک کے بہت سے علاقوں میں انتہائی قدامت پسندانہ کلچر کی وجہ سے خواتین کو درپیش مشکلات پر روشنی ڈالی۔