مقبول خبریں
جموں کشمیر نیشنل عوامی پارٹی برطانیہ برانچ کے زیرِ اہتمام فکر مقبول بٹ شہید ورکز یونیٹی کنونشن کا انعقاد
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
ہم دھوپ میں بادل کی، درختوں کی طرح ہیں!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
افغانستان میں خواتین کے حقوق کی حمایت کرتے رہیں گے،بیرونس وارثی
لندن ۔فارن آفس کی سینئر منسٹر بیرونس سعیدہ وارثی نے برطانیہ کی جانب سے افغانستان میں خواتین کے حقوق کی حمایت جاری رکھنے کی یقین دہانی کرائی ہے، ایمنسٹی یوکے کے نوجوان کارکنوں سے ملاقات کے دوران انھوں نے افغانستان میں خواتین کے حقوق اور اس ملک کو زیادہ خوشحال اور مستحکم بنانے میں ان کے کردار پر تبادلہ خیالات کیا۔ انھوں نے ایمنسٹی اور جینڈر ایکشن فار پیس اینڈسیکورٹی کی جانب سے ایک پٹیشن بھی وصول کی جس میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ برطانیہ افغان خواتین کی مدد جاری رکھے، پٹیشن کا خیر مقدم کرتے ہوئے بیرونس وارثی نے افغان خواتین کے حقوق کے تحفظ اور فروغ کیلئے سول سوسائٹی کی تنظیموں کی جدوجہد کی تعریف کی اور برطانیہ کی جانب سے ان کے، افغان حکومت اور دوسرے پارٹنرز کے ساتھ طویل المیعاد بنیادوں پر کام جاری رکھنے کی یقین دہانی کا اعادہ کیا۔ بیرونس وارثی نے کہا کہ مجھے فخر ہے کہ برطانیہ کے نوجوان بھی افغان معاشرے میں خواتین کے مساوی مقام کیلئے افغان نوجوانوں کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ ایمنسٹی جیسی تنظیمیں اس بات کو یقینی بنانے کیلئے اب افغان خواتین کی آواز کبھی بھی دبائی نہ جاسکے شاندار کام کر رہی ہیں۔ برطانیہ مکمل طور پر افغانستان کے ساتھ کھڑا ہے اور ہمارا یہ ساتھ 2014 میں افغانستان سے برطانوی افواج کی واپسی کے ساتھ بھی جاری رہے گا اور ہم آنے والے چیلنجوں اور مواقع کا سامنا کرنے کیلئے افغان خواتین اور لڑکیوں کی مدد کرتے رہیں گے، انھوں نے کہا کہ خواتین افغانستان کے مستقبل کی تعمیر میں اہم کردار ادا کرسکتی ہیں اور انھیں اپنا یہ کردار ادا کرنا چاہئے۔ بات چیت کے دوران افغان خواتین کو پیش آنے والی مشکلات اور ان پر بڑے پیمانے پر تشدد کی صورت حال بھی زیر غور آئی۔ بیرونس وارثی نے ملک کے بہت سے علاقوں میں انتہائی قدامت پسندانہ کلچر کی وجہ سے خواتین کو درپیش مشکلات پر روشنی ڈالی۔