مقبول خبریں
یوم عاشور کے حوالہ سے نگینہ جامع مسجد اولڈہم میں روح پرور،ایمان افروز محفل کا اہتمام
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
میاں جی کی لڑکیاں
پکچرگیلری
Advertisement
پاکستان نے گلگت بلتستان آرڈر 2018ء پر بھارتی تحفظات مسترد کر دیئے
اسلام آباد: پاکستان نے گلگت بلتستان آرڈر 2018ء پر بھارتی تحفظات مسترد کر دیئے ہیں۔ دفترِ خارجہ کا کہنا ہے کہ جموں وکشمیر کے بھارتی حصہ ہونے کا دعویٰ مسترد کرتے ہیں۔ جموں وکشمیر ایک متنازع علاقہ ہے۔ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے قراردادوں میں اس کے تنازع کی حیثیت کو تسلیم کیا گیا ہے۔ جموں و کشمیر کی حتمی حیثیت کا تعین اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق ہو گا۔ترجمان دفترِ خارجہ کا کہنا ہے کہ اقوامِ متحدہ کی قرارداد کے مطابق کشمیر کا فیصلہ جمہوری طریقے سے غیر جانبدارانہ ہو گا۔ یہ قراردادیں کشمیریوں کو حقِ رائے کی آزادی دیتی ہیں، جسے پوری دنیا نے تسلیم کیا۔دوسری جانب ایٹمی تجربات کے 20 سال مکمل ہونے پر دفتر خارجہ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان نیوکلیئر سپلائر گروپ میں شمولیت کا خواہشمند ہے۔ترجمان دفترِ خارجہ کی جانب سے جاری بیان میں واضح کیا گیا ہے کہ پاکستان کا ایٹمی پروگرام دفاعی مقاصد کے لئے ہے۔ پاکستان نے 20 سال ایٹمی طاقت کے عدم پھیلاؤ پالیسی پر سختی سے عمل کیا۔ پاکستان 2050ء تک ایٹمی توانائی سے 40 ہزار میگاواٹ بجلی کے منصوبے پر عمل پیرا ہے۔بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان کو 1998ء میں اپنے دفاع کیلئے ایٹمی تجربات کرنا پڑے۔ پاکستان کسی بھی جارحیت کا بھرپور جواب دینے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ پاکستان کے پاس جدید ترین ایٹمی ٹیکنالوجی موجود ہے۔