مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
برطانیہ کی مسلم کمیونٹی اپنی زکوٰة اس طرح دیں کہ واقعی کسی کے کام آئے:مسلم ایڈ
لندن:ماہ رمضان میں مسلم ایڈ برطانیہ کی مسلم کمیونٹی کو دعوت دے رہی ہے کہ وہ اپنی زکوٰة اس طرح دیں کہ یہ واقعی کسی کے کام آئے۔ اس خاص مہینے کے دوران یہ فلاحی تنظیم 6 ملین پائونڈ کی رقم جمع کرنے کے لئے پرعزم ہے جو زیادہ تر غزہ میں نومولود بچوں، صومالیہ کی خشک سالی سے متاثرہ کمیونٹیز اور شامی پناہ گزینوں کی زندگیاں بچانے والی سرگرمیوں کے لئے استعمال میں لائی جائے گی۔ مسلم ایڈ کی مہم اٹس رمضان! آئی ایم میکنگ مائی زکوٰة کائونٹ! پورے برطانیہ میں چلائی جائے گی جس کے تحت ملک بھر میں 150 بل بورڈز، 385 بسوں کے عقبی پینل اور آئوٹ ڈور ڈیجیٹل بورڈز کے ذریعے اپنا پیغام لوگوں تک پہنچایا جائے گا اور اس سلسلے میں بریڈفورڈ شاپنگ سنٹر، ایم 25 اور برمنگھم فلائی اوور جیسے مقامات پر بھی تشہیری سرگرمیاں کی جائیں گی۔ مہم کے سلسلے میں قومی اور کمیونٹی اخبارات میں اشتہارات دئیے جائیں گے، چینل ایس اور اسلام چینل کے علاوہ مسلم ایڈ کے سوشل میڈیا چینلز کے ذریعے اپیلیں کی جائیں گی۔ پورے ماہ رمضان کے دوران کمیونٹی سطح پر فنڈز جمع کرنے کی بھرپور سرگرمیاں کی جائیں گی، شارد جیسے تاریخی مقامات پر افطار کا اہتمام کیا جائے گا، سڑکوں اور ٹیوبز پر اپیلیں کی جائیں گی، گھر گھر جا کر فنڈز جمع کئے جائیں گے، سینکڑوں مساجد میں رابطہ و رسائی کے علاوہ عید بوٹ کروز، کمیونٹی بیک سیلز اور کار واش جیسی سرگرمیاں کی جائیں گی۔ مسلم ایڈ لبنان، اردن اور شام میں 8,750 شامی پناہ گزینوں کو اس مہینے کے دوران اشیائے خوردونوش کی خریداری میں مدد کے لئے فوڈ وائوچر فراہم کر رہی ہے۔ مشرق وسطیٰ کے لئے قائمقام ریجنل پروگرام مینجر احمد ابراہیم کے مطابق یہ فوڈ وائوچر لوگوں کی زندگیاں بدل سکتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ میری کچی آبادی سے تعلق رکھنے والی ایک خاتون سے بات ہوئی اور اب جب وہ مقامی مارکیٹ سے کھانے پینے کی چیزیں خریدنے جائے گی تو بہت خوش ہو گی کیونکہ اس سے پہلے ایسا کبھی نہیں ہوا اور اب اس کا کہنا تھا کہ میں خود کو باوقار محسوس کروں گی۔ دس سالہ سماہا شامی پناہ گزینوں کے لئے لبنان کے علاقے مہامارا میں بنائے گئے کئی کیمپوں میں سے ایک سلیمان کیمپ میں مقیم ہے۔ کیمپ کے ایک طرف سڑک اوردوسری جانب رہائشی آبادیاں ہیں۔ اس میں ساٹھ خیمے لگے ہیں اور ہر خیمے میں تقریباً پانچ افراد ناگفتہ بہ حالات میں زندگی گزار رہے ہیں۔ ان میں سے زیادہ تر لوگ کم وبیش دو سال سے یہاں مقیم ہیں۔ مسلم ایڈ کے سی ای او جہانگیر ملک کا کہنا تھا کہ مسلم کمیونٹی ہمیشہ ناقابل یقین حد تک دل کھول کر مدد کرتی ہے۔ 2016 میں برطانوی مسلمانوں نے ماہ رمضان کے دوران ان کی فلاحی تنظیم کو کل 100 ملین پائونڈ سے زائد عطیات دئیے یعنی 38 پائونڈ فی سیکنڈ۔ انہوں نے بتایا کہ اس سال مسلم ایڈ کی اپیل میں یہی پیغام دیا جا رہا ہے کہ دنیا کے انتہائی غریب اور کمزور ترین لوگوں کے بارے میں سوچیں۔ اس زکوٰة کی بدولت یمن میں ماہ رمضان کے دوران 60 پائونڈ کے عوض گھر بھر کے لئے سحر اور افطار کی خریداری ہو سکتی ہے، 200 پائونڈ کے عوض شام میں ایک خاندان کو رہائش فراہم کی جا سکتی ہے اور 300 پائونڈ کی رقم سے صومالیہ میں خشک سالی سے متاثرہ سو خاندانوں کو پانی فراہم کیا جا سکتا ہے۔ سلیبریٹی شیف مدھر جعفری، اینزلے ہیریٹ اور صالحہ محمود احمد (ماسٹر شیف یو کے چیمپئن 2017) بھی اس مہم کی حمایت کرتے ہوئے اپنی نیک خواہشات کا اظہار کر رہی ہیں۔ ان کے ریسپیز مسلم ایڈ کی ویب سائٹ پر دیکھے جا سکتے ہیں۔ مسلم ایڈ کا شمار برطانیہ کی بیس بڑی امدادی و ترقیاتی تنظیموں میں ہوتا ہے جس کا قیام 1985 میں عمل میں لایا گیا۔ یہ اس وقت ستر سے زائد ممالک میں عقیدے، نسلی وابستگی یا سیاسی نظام سے بالاتر ہو کر تمام کمیونٹیز کے ساتھ کام کر رہی ہے۔ مسلم ایڈ کو اس کی ویب سائٹ کے ذریعے بھی زکوٰة دی جا سکتی ہے۔