مقبول خبریں
پاکستان کا دورہ انتہائی کامیاب رہا ،ممبر برطانوی پارلیمنٹ ٹونی لائیڈ و دیگر کی پریس کانفرنس
مشتاق لاشاری سی بی ای کا پورٹریٹ کونسل ہال میں لگا نے کی تقریب، بیگم صنم بھٹو نے نقاب کشائی کی
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
ڈاکٹر حیدر عباس کا شوگر کے مریضوں کو آگاہی دینے بارے ایک ورکشاپ کا انعقاد
اولڈہم:اولڈہم کلینکل کمیشنگ گروپ ذیابیطس کے ڈائریکٹر ڈاکٹر حیدر عباس کی شوگر کے مریضوں کو آگاہی دینے بارے ایک ورکشاپ کا انعقاد کیا جسمیں میں شوگر کی مرض میں مبتلا مریضوں نے شرکت کی اس موقع پر ڈاکٹر حیدر عباس کا کہنا تھا کہ شوگر کے مریضوں کو ڈاکٹر کی ہدایات کے مطابق روز ہ رکھنا چاہئےروزے کی حالت میں مریض کو شوگر کی مقدار کو باقاعدگی سے چیک کرنا چاہیےاور انسولین لینے والے شوگر کے مریضوں کو زیادہ احتیاط کی ضرورت ہے۔جو مریض گردوں کے مرض یا پھر تواتر سے شوگر کی مقدار کم ہوتی ہے انہیں دورزہ نہیں رکھنا چاہیے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ شوگر کی مختلف اقسام کی گولیوں اور انسولین کی مقدار کیسے لینی ہے فیملی ڈاکٹر سے رجوع کریں۔اگر مریض جان لیوا بیماری میں مبتلا ہے تو روزہ نہیں رکھنا چاہیے۔ڈاکٹر آمنہ چوہدری کا کہنا تھا کہ رمضان المبارک میں شوگر کے مریضوں کو خوراک بارے احتیاط کرنی چاہیے اور وہ چیزیں نہیں کھانی چاہیے جن سے شوگر کی مقدار بڑھ جائے اور بیماری میں مزید پیچیدگی پیدا ہو جن مریضوں کی شوگر کنٹرول میں نہیں ہے انہیں طبعی لحاظ سے دورزہ نہیں رکھنا مذہبی حوالہ سے عالم دین سے رجوع کرنا چاہیے۔عالم دین مولانا عبد الشکور قادری نے قرآن کریم اور احادیث کی روشنی میں کہا کہ سفر اور جان لیوا بیماری میں مبتلا مریض ۔حاملہ خواتین روزہ نہ رکھیں اور اگر کوئ شخص رمضان المبارک کے بعد صحت یاب ہو جاتا ہے تو اسے کسی اور ماہ روزے رکھ لینے چاہیے اگر بیماری صحت یاب نہیں ہوتا تو پھر روزے نہ رکھے اور تیس دن غربا کو کھانا کھلا دے آگاہی مہم میں محمد بشیر،مولانا عبدالشکور قادری۔شرافت علی، گلتاسب ، محمد عباس، اللہ دتہ محمد شبیر نے شرکت کی۔ورکشاپ میں موجود ذیابیطس کے مریضوں کا کہنا تھا کہ یہاں آ کر روزہ رکھنے کے لیے مذید حفاظتی تدابیر سے آگاہی حاصل ہوئی ہے خاصکر اگر جسم میں شوگر کی مقدار کم ہو یا پھر زیادہ بڑھ جائے دونوں صورتوں میں فی الفور روزہ کھول کر شوگر کی مقدار کو مطلوب سطح تک لانا ہمیں دین اسلام کی بھی پیروی کرنی چاہیے ساتھ میں زندگی بچانا بھی فرض ہے۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر