مقبول خبریں
اولڈہم ٹاؤن میں پہلی جنگ عظیم کی صد سالہ تقریب،جم میکمان،مئیر کونسلر جاوید اقبال و دیگر کی شرکت
مشتاق لاشاری سی بی ای کا پورٹریٹ کونسل ہال میں لگا نے کی تقریب، بیگم صنم بھٹو نے نقاب کشائی کی
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
عالمی برادری مسئلہ کشمیر کے چاروں فریقوں پر مشتمل عالمی کانفرنس کا انعقاد کرے:راجہ فاروق حیدر
لندن:وزیر اعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حید ر خان نے عالمی برادری سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں پر بھارت سے احتجاج کریں اور کشمیری عوام تسلیم شدہ تحریک آزادی کشمیر میں معاونت کر کے مسئلہ کشمیر کے چاروں فریقوں پر مشتمل عالمی کانفرنس کا انعقاد کریں جس کا اہتمام برطانیہ اور امریکہ جیسے ممالک ہی کر سکتے ہیں کیونکہ بھارت اور پاکستان آپس میں بڑھ کر مسئلہ حل نہیں کروا سکے اور کشمیریوں کی اب تیسری نسل بھی قربانیاں دے رہی ہے،بین الاقوامی برادری اورمختلف ممالک کے ارکان پارلیمنٹ خصوصاً فرینڈز آف کشمیر کے ارکان ریاست کے دونوں اطراف کا دورہ کریں اور حالات کا جائزہ لے کر مجوزہ کانفرنس میں مسئلہ کشمیر کے مستقل حل میں کاوشیں تیز کریں تاکہ پاکستان بھارت اور کشمیری برصغیر میں مل جل کر پر امن طریقے سے اپنے اپنے علاقوں میں مقامی مسائل حل کر سکیں،ان خیالات کا اظہار وزیر اعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر خان نے گزشتہ روز اپنا دورہ برطانیہ ختم کرنے سے پہلے برطانوی پارلیمنٹ کے کشمیر گروپ کے عہدیداروں اور دیگر کشمیر دوست ارکان سے ایک خصوصی نشست میں کیا جس کا اہتمام جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے چیئرمین راجہ نجابت حسین نے کیا تھا،دو گھنٹے کی اس نشست میں وزیر اعظم نے جہاں لیبر اور کنزرویٹو پارٹی کخے ممبران پارلیمنٹ سے ملاقاتیں کیں وہاں کشمیر گروپ کے عہدیداروں کو اپنی طرف سے خصوصی شیلڈز بھی پیش کیں،اس موقع پر چیئرمین کشمیر پارلیمنٹری گروپ کرس لیزے ایم پی،ڈپٹی چیئرمین جیک برئیرٹن ایم پی،شیڈو وزیر خارجہ برائے یورپ خالد محمود ایم پی،شیڈو جسٹس منسٹر امیگریشن افضل خان ایم پی،شیڈو جسٹس وزیر بیرسٹر یاسمین قریشی ایم پی،شیڈو منسٹر بیرسٹر عمران حسین ایم پی،محمد یاسین ایم پی،چارلی ریلفک ایم پی اور دیگر ممبران پارلیمنٹ نے وزیر اعظم فاروق حیدر کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر گروپ میں تمام سیاسی پارٹیوں کے لوگ مل کر برطانوی پارلیمنٹ میں بھی اٹھاتے ہیں اور حکومت تک بھی کشمیریوں کی آواز پہنچانے میں سر گرم عمل ہیں اور حالیہ سالوں میں مسلسل تین بار پارلیمنٹ بحث کے بعد بہت جلد چوتھی بحث بھی ہو گی جس کیلئے راجہ نجابت حسین اور انکی ٹیم نے ممبران پارلیمنٹ سے کشمیر پٹیشن پر دستخط کروا کر ہمیں مہیا کئے ہیں اور گزشتہ70سال میں پہلی بار ہم نے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر انکوائری شروع کروائی ہوئی جس پر بہت جلد کارروائی مکمل ہو جائے گی اور کشمیر گروپ کے عہدیدار ریاست کے دونوں اطراف کا دورہ بھی بہت جلد کریں گے تاکہ دونوں اطراف مقامی اور قومی لیڈر شپ سے ملاقاتوں کے علاوہ انسانی حقوق کے متاثرین سے براہ راست ملاقاتیں کریں گے،اس خصوصی نشست میں وزیر اعظم نے ممبران پارلیمنٹ کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کے علاوہ آزاد کشمیر کے تمام سرحدی علاقوں میں بھارت کی افواج سویلین کشمیریوں کو نشانہ بنارہی ہے۔رپورٹ:عمران راجہ