مقبول خبریں
پاکستانی کمیونٹی سنٹر اولڈہم میں بیڈمنٹن ٹورنامنٹ کا انعقاد، برطانیہ بھر سے 20 ٹیموں کی شرکت
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
ہم دھوپ میں بادل کی، درختوں کی طرح ہیں!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
پاکستانی کمیونٹی سنٹر مانچسٹر میں استحکامِ پاکستان کانفرنس،محفلِ مشاعرہ کی تقریب،مقررین کا خطاب
مانچسٹر:پاکستان کے لوگوں نے اس ملک میں اکر جو اعلیٰ اقدار اور اچھی باتیں سیکھی ہیں ہمیں وہ ساری اچھائیاں اپنے ملک میں درکار ہیں ،لہذاآپ کوشش کریں کہ پونڈ اور ڈالر وں کے ساتھ ساتھ علم ،اعلی اخلاقیات کے نمونے بھائی چارگی اور اپنی مدد آپ کے اعلیٰ اُصولوں پر قائم رہ کر زندگی گذارنے کے طریقے بھی اپنے ملک میں لایں کیونکہ ہمیں آپ کے زرِمبادلہ کے ساتھ ساتھ اِن چیزوں کی بھی اشد ضرورت ہے اِن خیالات کا اظہار ممتاز دانشور،کالم نگار،سہیل وڑائچ نے پاکستانی کمیونٹی سنٹر مانچسٹر میں استحکامِ پاکستان کانفرنس اور محفلِ مشاعرہ کے اختتام پر صدارتی خطبہ میں کیا ،اُنہوں نے کہا کہ چائنا کے لوگوں نے ساری دنیا سے چھوٹی اور بڑی چیزیں اپنے ملک میں لے جاکراتنی ترقی کر لی ہے کہ آج چائنا دنیا کا ایک ترقی یافتہ ملک بن چکا ہے اسی طرح کوریا کے لوگوں نے جاپان میں رہ کر جو کچھ سیکھا اور جو وسائل حاصل کئے وہ اُنہوں نے اپنے ملک میں لے جاکر اپنے ملک کو ایک یافتہ ملک بنا لیا ہے اس طرح ہمیں بھی اپنے تارکین وطن بھائیوں سے وہ تمام وسائل اور اعلیٰ قدریں اپنے ملک میں درکار ہیں آپ کوشش کریں کہ ڈالر اور پونڈ کے ساتھ ساتھ دیگر اشیاء بھی ملک میں لے کر آیں جن سے ہمارا ملک بھی چائنا اور کوریا کی طرح ایک ترقی یافتہ ملک بن سکے،اُنہوں نے کہا کہ اس ملک کے لوگوں میں جو اعلی اقدار پائی جاتی ہیں مثلاًیہ اپنے ہمسائے کے ساتھ کتنا اچھا سلوک کرتے ہیں یہ عام زندگی میں کتنا نظم و نسق رکھتے ہیں ،کس قدر ٹریفک کے اُصولوں کی پابندی کرتے ہیں ہمیں اپنے ملک میں یہ تمام خوبیاں درکار ہیں ہم نے دیکھا ہے کہ ہمارے تارکینِ وطن نے بے تہاشہ زرِ مبادلہ کما کر اپنے وطن کو بھیجا ہے ،مگر ہم آج بھی ایک ترقی یافتہ قوم نہیں بن سکے ۔کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے لندن کے ممتاز قانون دان ڈاکٹر ملک لیاقت نے کہا کہ اوورسیز پاکستانیوں کو اس ملک کی سیاست میں زیادہ سے زیادہ حصہ لینا چاہیے تاکہ ہم اپنے معاملات کی خود دیکھ بھال کر سکیں ،اُنہوں نے کہا کہ پاکستان کی سیاسی جماعتوں کو اور وہاں کے لوگوں کو اپنے مسائل خود حل کرنے دیں ہمیں معلوم ہے کہ وہ اپنے ملک کو بہتر طریقے سے چلا سکتے ہیں ،ہم نے اور ہماری اُلاد نے باقی زندگی اس ملک میں گذارنی ہے لہذا ہمیں یہاں کی سیاسیات کو سیکھنا ہو گا تاکہ ہم اپنے بچوں کو ایک اچھا مستقبل دے سکیں ،ممتاز سماجی رہنما صاحبزادہ لختِ حسنین نے کانفرنس کے شرکاء سے اپنے خطاب میں کہا کہ پاکستانی ایک عظیم قوم ہیں پوری دنیا میں اس وقت پاکستانی سب سے زیادہ چیرٹی دیتے ہیں اُنہوں نے کہا کہ مجھے اپنی چیرٹی تنظیم کے لئے ساری دنیا گھومنے کا موقع ملا ہے میں نے پاکستانیوں سے زیادہ درد دل رکھنے والی اور خیراتی کاموں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لینے والی کوئی اور قوم نہیں دیکھی ،اُنہوں نے کہا کہ دنیا نے صرف علم حاصل کر کے ترقی کی ہے اگر ہم اس ملک میں رہتے ہوئے صرف دو سو لوگ یہ ذمہ داری لے لیں کہ ہم پاکستان میں دوسوبچوں کو اعلی تعلیم کے لئے سپانسر کریں گے تو یقین کریں ہمارا ملک تعلیم کے میدان میں بھی کسی سے پیچھے نہیں رہے گا ،تقریب سے صاحبزادہ جہانگیر خان،میاں طارق جاوید،چودھری سکندر نوازاور سینئر صحافی طاہر چودھری نے بھی خطاب کیا ،استحکام پاکستان کانفرنس کی نظامت کے فرائض ممتاز شاعر صابر رضا اور ماریہ خان نے سرانجام دیئے کانفرنس کے دوسرے حصے میں عالمی محفل مشاعرہ کا انعقاد کیا گیا جس کی صدارت سہیل وڑائچ نے کی جبکہ مہمانان خصوصی چودھری محمد انور،پروفیسر خالد مسعود خان،محمد اظہر،شکیل قمر ،ڈاکٹر جاوید کنول اور چودھری سکندر نواز تھے ،محفلِ مشاعرہ کی نظامت کے فرائض ممتاز شاعر انور جمال فاروقی اور متعدد کتابوں کی مصنفہ نغمانہ کنول شیخ نے سر انجام دیئے ،مشاعرے میں جن شعراء اور شاعرات نے اپنا کلام پیش کیا اُن کے اسمائے گرامی تھےمحمد عالم پنوار،پامیلہ ملک ،شارق خان ،لیاقت علی عہد ،سکند نواز ، شکیل قمر ،عبدالغفور کشفی،جاوید کنول ،انور جمال فاروقی،محمد اظہر ،نغمانہ کنول شیخ صابر رضا،چودھری محمد انوراور خالد مسعود خان،اس موقع پر باجی صابرہ ناہید کی نگرانی میں سکولوں کے بچوں نے ٹیبلو اور قومی نغمےپیش کیئے جنہیں حاضرین نے بے حد پسند کیا ،آخر میں مقامی ریسٹورنٹ میں کانفرنس کے شرکاء کے پُر تکلف کھانے کا اہتمام بھی کیا گیا