مقبول خبریں
کاروباری شخصیات سید اسد علی ،احمد رضا کی مئیر کونسلر محمد زمان سے ملاقات،مختلف امور پر تبادلہ خیال
اوورسیز پاکستانیوں کے لئے خصوصی سیل بنایا جانا چاہئے: سلیم مانڈوی والا
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
برطانیہ میں آباد تارکین وطن کی مسئلہ کشمیر پر کاوشیں قابل تحسین ہیں:چوہدری محمد سرور
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
کشمیریوں کو ان کا حق دیئے بغیر خطے میں پائیدار امن کا حصول ممکن نہیں: راجہ نجابت حسین
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
برطانیہ میں مقیم کشمیری و پاکستانی 16مارچ کو بھارت کے خلاف مظاہرہ کریں گے: راجہ نجابت حسین
وہ بے خبر تھا سمندر کی بے نیازی سے!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
نومولود بچوں کو اپنا دودھ پلانے والی مائوں کیلئے دوسو پائونڈ ماہانہ وظیفہ، نئی حکومتی سکیم
لندن ... برطانیہ میں نئی بننے والی مائوں کو نومولود بچوں کو اپنا دودھ پلانے پر مائل کرنے کیلئے حکومت نے ایک نئی سکیم متعارف کرانے کا اعلان کیا ہے جس کے تحت ایسا کرنے والی مائوں کو اضافی طور پر دو سو پائونڈ ہر ماہ وظیفہ دیا جائے گا۔ کچھ ناقدین نے اسے رشوت سے بھی تشبیہ دی ہے لیکن جس تحقیق کے نتیجے میں یہ فیصلہ کیا گیا ہے اس کے مطابق برطانیہ میں شیر خوار بچوں کو اپنا دودھ پلانے والی مائیں تیزی سے کم ہو رہی ہیں۔ ابتدائی طور پر یہ منصوبہ برطانوی علاقے جنوبی یارک شائر اور ڈربی شائر میں آزمائشی طور پر شروع کیا جائے گا۔ اگر یہ کامیاب رہا تو اسے اگلے سال انگلینڈ بھر میں شروع کیا جائے گا۔ اس منصوبے کے تحت شیفیلڈ اور چیسٹر فیلڈ کے بعض حصّوں میں ماؤں کو ایسے واؤچر دیے جائیں گے جنہیں وہ سپر مارکیٹ اور دکانوں میں خرچ کر سکیں گی۔ اس واؤچر کے حصول کے لیے ماں کو چھ مہینے تک اپنے بچے کو دودھ پلانا پڑے گا تاہم ماؤں کو ایک سو بیس پاؤنڈ ابتدا میں ملیں گے۔ شعبۂ صحت کے کارکن اس بات کی نگرانی کریں گی کہ مائیں دودھ پلا رہی ہیں یا نہیں۔ مالی فائدے کو ترغیب کے طور پر استعمال کیا جانا برطانیہ کے طبی شعبے میں نیا نہیں ہے اور لوگوں کو تمباکو نوشی کم کرنے اور وزن کم کرنے کی ترغیب دینے کے لیے ایسا کیا جا چکا ہے۔ تاہم یہ پہلی بار ہے کہ اسے دودھ پلانے والی ماؤں کو ترغیب دینے کے لیے استعمال کیا جا رہا ہے۔