مقبول خبریں
دار المنور گمگول شریف سنٹر راچڈیل میں جشن عید میلاد النبیؐ کے حوالہ سےمحفل کا انعقاد
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
امید ہے افضل خان یورپی پارلیمنٹ میں کشمیر مظالم بارے آواز اٹھاتے رہیں گے :مشال ملک
اسلام آباد : حریت رہنما یاسین ملک کی اہلیہ مشال ملک نے کہا ہے کہ بھارتی افواج نے مقبوضہ کشمیر میں مظالم کی انتہا کرد ی ہے ، یاسین ملک سمیت حریت قائدین کے ساتھ جو ہو رہا ہے دنیا دیکھ رہی ہے ،کشمیری اپنے حق خود ارادیت کے حصول کے لئے بر سر پیکار ہیں،بھارت جبرو استبداد کے ذریعے ان کی آواز نہیں دبا سکتا،افضل خان جیسی شخصیات سے ہمیں امید ملتی ہے جنھوں نے یورپی پارلیمنٹ اور بر طانیہ میں مسئلہ کشمیر اور عالمی امن کے لئے آواز اٹھائی۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے ہفتہ کو یہاں یورپی یونین کے برطانوی ممبر پارلیمنٹ افضل خان کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔مشال خان نے کہا کہ بھرتی قابض افواج نے حق خود ارادیت کے حصول کے لئے جدوجہد کرنے والے نہتے کشمیری عوام پر مظالم کی انتہا کر رکھی ہے عالمی برادری کی اس حوالے سے خاموشی افسوسناک ہے ۔انھوں نے کہا کہ یاسین ملک سمیت حریت قائدین کے ساتھ جو سلوک روا رکھا گیا ہے وہ پوری دنیا کے سامنے ہے جو بدترین ریاستی دہشت گردی کے ذریعے کشمیری عوام کی آواز کو دبانے کی کوشش کر رہا ہے لیکن کشمیری نہ پہلے اپنے مطالبہ سے ایک انچ پیچھے ہٹے اور نہ اب ہٹیں گے ۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ افضل خان یورپی پارلیمنٹ میں اور برطانیہ میں کشمیریوں کے خلاف روا رکھی گئی بھارتی قابض افواج کی انسانی حقوق کی بد ترین پامالیوں اور کشمیریوں کی نسل کشی کے لئے نوجوانوں کو نشانہ بنانے کے واقعات کے خلاف آواز اٹھاتے رہیں گے ۔ اس موقع پریورپی یونین کے برطانوی ممبر پارلیمنٹ افضل خان نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بھارتی ظلم کی شدت کم ہونے کی بجائے دن بدن بڑھ رہی ہے جس کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے ۔انھوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کے عوام حق خود ارادیت چاہتے ہیں جو ان کا بنیادی حق ہے اقوام عالم کو چاہیئے کہ وہ مسئلہ کشمیر کو کشمیری عوام کی امنگوں کے مطابق جلد حل کرانے کے لئے اپنا کردار ادا کرے جس کی وجہ سے جنوبی ایشیا کا امن کشمیر کی وجہ سے تباہ ہورہا ہے ۔ افضل خان نے کہا کہ یورپ کی تاریخ بھی جنگوں سے بھری پڑی ہے مگر آج انہیں بھی سمجھ آگئی ہے کہ جنگ کسی مسئلے کا حل نہیں اور امن ہی تمام مسائل کا حل ہے ۔انھوں نے کہا کہ بھارت کو چاہئے کہ وہ مذاکرات کے ذریعے پاکستان کے ساتھ اپنے تمام تصفیہ طلب مسائل کو حل کرے اور مسئلہ کشمیر جو ایک بنیادی مسئلہ ہے اسے اقوام متحدہ کی منظور شدہ قراردادوں کے مطابق حل کرے کیونکہ جنوبی ایشیا میں امن کیلئے مسئلہ کشمیر کا حل ناگزیر ہے ۔افضل خان نے کہا کہ کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالیوں پر پہلے بھی یورپ اور برطانیہ کے ہر فورم پر آواز اٹھائی ہے اور آئندہ بھی مسئلہ کشمیر اور عالمی امن کے لئے اپنا کردار ادا کرتے رہیں گے ۔انھوں نے کہا کہ بھارت اپنے مظالم سے اقوام عالم کی نظریں ہٹانے کے لئے انٹرنیشنل کمیونٹی کو کشمیر جانے کی اجازت نہیں دیتا، کشمیریوں کی تیسری نسل بھارتی مظالم کا نہتے سامنا کر رہی ہے ،دنیا کو کشمیر یوں کے لیے آواز اٹھانی چاہئے ۔