مقبول خبریں
چوہدری سعید عبداللہ ،چوہدری انور،حاجی عبدالغفار کی جانب سے حاجی احسان الحق کے اعزاز میں عشائیہ
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
میاں جی کی لڑکیاں
پکچرگیلری
Advertisement
برطانیہ نےہمیشہ رواداری کا مظاہرہ کیا ،برٹش شہری بلا امتیاز مذہب، رنگ نسل برابر ہیں: لارڈ شیخ
لندن ...کنزرویٹو مسلم فورم برطانیہ بھر میں حکومتی پارٹی کے اندر مسلمانوں کی بھرپور نمائندگی کرے گا، جبکہ تمام کمیونٹیز کو یکجا کرنے کی ڈیوڈ کیمرون کی پالیسی کو ہر سطح پر اجاگرکرے گا۔ اگلے تین ماہ میں برطانیہ کے ہر ریجن میں فورم کی تنظیمیں مکمل کرکے 80 انتخابی حلقوں میں پارٹی امیدواروں اور یورپین پارلیمنٹ کے انتخابات میں پارٹی کے ہراول دستے کے طورپر کام کریں گے۔ موجودہ برطانوی حکومت ڈیوڈ کیمرون کی قیادت میں برطانوی معیشت اور اس کے عالمی کردار کو احسن طریقے سے نبھا رہی ہے۔ برطانیہ میں بسنے والے تمام لوگوں کو اپنے بچوں کے بہتر مستقبل کے لئے ڈیوڈ کیمرون کو دوبارہ وزیراعظم بنوانے کے لیے کنزرویٹو پارٹی کی حمایت کرنی چاہیے۔ برطانیہ بھر میں مختلف مذاہب کے تہوار مناکر یہاں کی حکومت اور سیاستدانوں نے ہمیشہ رواداری کا مظاہرہ کیا ہے، کیونکہ برٹش شہری بلا امتیاز مذہب، رنگ نسل برابر کے حقوق رکھتے ہیں۔ کمیونٹی لیڈروں اور مذہبی تنظیموں کو عوامی ہم آہنگی اور باہمی بھائی چارے کے لیے بھرپور کردار ادا کرنا چاہیے، کیونکہ تمام مذاہب امن اور دوستی کا درس دیتے ہیں جو برطانوی معاشرے کی بنیاد ہے۔ ان خیالات کا اظہار مقررین نے کنزرویٹو مسلم فورم کے عیدالاضحی ڈنر کے موقع پر کیا۔ جس سے برطانوی حکومت کے اہم وزیر برائے لوکل گورنمنٹ اور کمیونٹیز ایرک پکلز صدر، فورم کے چیئرمین لارڈ شیخ، ہائوسنگ کے وزیر کرس ہوپکنز صدر، برطانوی وزیر لارڈ طارق احمد، بیرونس نکلسن آف ونٹر بورن، لارڈ پوپٹ آف ہیرو، لارڈ سوہن سنگھ آف ویمبلڈن، ڈاکٹر رامی رانگٹر، فورم کے ڈپٹی چیئرمین محمد آمین اور رضا انجم نے خطاب کیا۔ امام شکیل کی تلاوت سے شروع ہونے والے اس پروگرام میں برطانیہ مسلم سے 100 سے زائد فورم کے عہدیداروں اور مہمانوں جن میں جموں کشمیر تحریک حق خودارادیت یورپ کے چیئرمین راجہ نجابت حسین، کل جماعتی کشمیر رابطہ کمیٹی برطانیہ کے صدر راجہ امجد خان، تحریک انصاف آزاد کشمیر برطانیہ کی کوآرڈینیٹر شہناز صدیق، بریڈ فورڈ مسلم وومن فورم کی چیئرپرسن صبیحہ خان، کنزرویٹو مسلم فورم یارکشائر ہمبر کی چیئر پرسن عطرت علی، تحریک حق خودارادیت شعبہ خواتین نارتھ ویسٹ کی چیئر پرسن فلک خان، ایلڈر شاٹ سے سابق میئر کونسلر محمد سلیم، والسل سے کونسلر زاہد علی، اولڈہم سے کنزرویٹو رہنما سجاد حسین، نیلسن سے سابق کونسلر محبوب احمد، کونسلر آصف ایوب لندن، کونسلر کمال بٹ، خرم میاں ارور لندن کے گرد و نواح سے کمیونٹی لیڈروں اور کنزرویٹو پارٹی کے عہدیدار شامل تھے۔ لارڈ الطاف شیخ نے اپنے استقبالیہ خطاب میں کہا کہ گزشتہ نو سال سے کنزرویٹو پارٹی کے اندر مسلمانوں اور دیگر کمیونٹیز کے حقوق اور پارٹی کا پیغام عام عوام تک پہنچانے کے لیے ہم نے مسلم فورم کا قیام عمل میں لاکر کنزرویٹو پارٹی کو منظم کرنے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ جبکہ برطانیہ میں بسنے والے لوگوں اور مختلف مذاہب سے تعلق رکھنے والے اکابرین کو ایک پلیٹ فارم پر اکٹھا کرکے حکومت کے اقدامات بھی ان تک پہنچائے ہیں۔ اس سے قبل ہم نے لندن اور پھر پارٹی کانفرنسوں میں ٹینٹ لگانے اور ایک فرنج میٹنگ بلانے پر اکتفا کیا ہوا تھا۔ مگر اب آنے والے یورپی و برطانوی انتخابات کے لیے پارٹی امیدواروں کو کامیاب کرانے کے لیے اسے علاقائی سطح پر اور ہر شہر و علاقے میں منظم کرنے کا پروگرام ترتیب دیا ہے جس کے لیے راجہ نجابت حسین، بیگم عطرت علی، سابق کونسلرمحبوب احمد اور دیگر رہنما متحریک کردار ادا کررہے ہیں۔ ہمارے فورم کا نام مسلم فورم ہے۔ مگر اس میں ہم ہر مذہب اور طبقے کے لوگوں کو شامل کرکے پارٹی کے ہاتھ مضبوط کررہے ہیں اور ہماری تقریبات میں بھی تمام لوگ شامل ہیں۔ انہوں نے اس موقع پر کہا کہ آنے والا برطانوی انتخاب بڑا اہم ہے اور اگر ہماری کمیونٹی کو مقامی اور عالمی مسائل میں برطانوی حکومت سے مثبت کردار ادا کرنا چاہیے تو وہ ڈیوڈ کیمرون کی قیادت میں کنزرویٹو پارٹی کو اکثریت دلواکر حکومت بنوائیں تو مسلمانوں کے اہم معاملات حل کروانے میں مدد ملے گی۔ برطانوی وزیر اور ڈیوڈ کیمرون کے دست راست ایرک پکلز نے اپنے خصوصی خطاب میں کہا کہ وہ عرصہ چالیس سال سے مسلمانوں کے ساتھ بریڈ فورڈ سے لے کر آج قومی سطح پر مختلف کمیونٹی سمیت عیدالاضحی منا رہے ہیں۔ انہوں نے وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون اور اپنی حکومت کی طرف سے تقریب میں موجود لوگوں کو عیدالاضحی کی مبارکباد دی جبکہ اپنے خطاب میں کہا کہ برطانوی معاشرہ مختلف مذاہب اور کلچرز پر مشتمل نے جنہوں نے اس ملک کی بہتری میں بڑا موثر کردار ادا کیا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ آج آپ کے سامنے اس ملک کی حکمران جماعت نے مختلف مذاہب کے لوگوں کو ان کی صلاحیتوں کے پیش نظر اہم عہدے دیے گئے ہیں اور آئندہ بھی حکومت ایسے لوگوں کو آگے لائے گی جو ملک و قوم کی بہتری کے لیے کام کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ اس ملک میں ہر شخص کو اپنی صلاحیتوں کو بروئے کار لانے کا موقع دیا جائے گا اس لیے ایشیائی کمیونٹی کے لوگ کنزرویٹو پارٹی کو کامیاب کریں۔ انہوں نے اس موقع پر خصوصی طور پر بریڈ فورڈ کا ذکر کیا اور کہا کہ پروگرام میں بریڈ فورڈ کی نمائندگی دیکھ کر محسوس ہوتا ہے کہ میں بریڈ فورڈ میں ہی کمیونٹی پروگرام سے خطاب کررہا ہوں۔ کھتیلے سے ممبر پارلیمنٹ اور حال ہی میں ہائوسنگ اور ٹائونز کے وزیر کرس ہوپکنز نے کہا کہ ایرک پکلز، مارگریٹ ہیٹن اور میرا یہاں حکومتی وزیر کی حیثیت سے موجود ہونا بریڈ فورڈ کے عوام کو کریڈٹ جاتا ہے۔ کیونکہ ہم تینوں کنزرویٹو پارٹی کی طرف سے بریڈ فورڈ کونسل کے لیڈر رہ چکے ہیں۔ انہوں نے لارڈ شیخ اور فورم کے عہدیداروں سمیت تمام مسلمانوں خصوصاً اپنے حلقے میں بسنے والے کشمیریوں کا تفصیل سے ذکر کرتے ہوئے ان کی بہتری کے لیے بھرپور نمائندگی کا وعدہ کیا۔ پاکستانی نژاد لارڈ طارق احمد نے اپنے خطاب میں کہا کہ آج وزیراعظم ہائوس، وزارت خارجہ، ہائوس آف کامنز اور ہائوس آف لارڈز میں نہ صرف مسلمانوں کی بھرپور نمائندگی ہے بلکہ مسلمانوں کے مذہبی تہواروں کا منایا جانا اس بات کا ثبوت ہے کہ کنزرویٹو پارٹی کی حکومت مسلمانوں کو اس ملک اور معاشرے میں اہم مقام دیتی ہے۔ بیرونس ایمانکلسن نے اپنے خطاب میں کہا کہ وہ چند سالوں سے لارڈ شیخ کی دعوت پر اس پروگرام میں شرکت کرتی ہیں جو ملٹی کلچرل معاشرے کی عکاسی کرتی ہے۔