مقبول خبریں
ن لیگ برطانیہ و یورپ کا نواز شریف،مریم نواز اور کیپٹن صفدر کی سزائیں معطل ہونے پر اظہار تشکر
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
ہم دھوپ میں بادل کی، درختوں کی طرح ہیں!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
سیاہ برقع لازم نہیں، مگر خواتین کے لیے شائستہ لباس ہے:سعودی ولی عہد
امریکہ: سیاہ برقع لازم نہیں، مگر خواتین کے لیے شائستہ لباس ہے۔ شریعت میں یہ کہا گیا ہے کہ خواتین کو بھی مردوں کی طرح باوقار لباس پہننا چاہیے لیکن اس لباس کا مطلب سیاہ برقع یا سیاہ سرپوش ہی نہیں ہے۔ سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے امریکی ٹی وی سے انٹرویو میں میزبان کے خواتین کے حقو ق اور سعودی خواتین کے روایتی لباس سے متعلق سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ خواتین کو اپنے شائستہ لباس کے انتخاب کی آزادی ہونی چاہیے اور یہ آزادی صرف سیاہ برقع تک محدود نہیں ہونی چاہیے۔ انھوں نے مزید کہا کہ قوانین بڑے واضح ہیں، شریعت میں یہ کہا گیا ہے کہ خواتین کو بھی مردوں کی طرح باوقار لباس پہننا چاہیے لیکن اس لباس کا مطلب سیاہ برقع ہی نہیں، اس کا فیصلہ خواتین پر چھوڑ دینا چاہیے کہ وہ کس قسم کے شائستہ اور باوقار لباس کا اپنے پہننے کے لیے انتخاب کرتی ہیں۔