مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مقبوضہ کشمیر میں تحریک آزادی زور پکڑتے ہی بھارتی فوج کے مظالم میں اضافہ ہو جاتا ہے: شاہ غلام قادر
اولڈہم:مقبوضہ کشمیر میں تحریک آزادی کشمیر جب بھی زور پکڑتی ہے اور لوگ سڑکوں پر آکر مظاہرے شروع کرتے ہیں تو ان کی آواز دبانے کے لیے بھارتی سکیورٹی ادارے نہتے شہریوں کو ظلم و تشدد کا نشانہ بناتے ہیں ،عالمی سطح پر اس سے توجہ ہٹانے کے لیے بھارتی سکیورٹی ادارے اوچھے ہتھکنڈے استعمال کرتے ہوئے لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزی کرتے ہوئے وہاں پر رہائش پذیر لوگوں کو نشانہ بناتے ہوئے شدید زخمی اور شہید کر دیتی ہے تاکہ مقبوضہ کشمیر سے توجہ ہٹائی جائے۔یہ باتیں آزاد کشمیر قانون ساز اسمبلی کے سپیکر شاہ غلام قادر نے برطانیہ کی سیاسی،سماجی اور مذہبی شخصیت راجہ آفتاب شریف کی رہائش گاہ پر رکھے گئے ناشتہ میں میڈیا سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیں۔انہوں نے کہا کہ پاکستان حکومت کی کشمیر پالیسی واضح ہے جب میاں نواز شریف وزیراعظم کی حیثیت سے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں خطاب کرنے کے لیے گئے تو انہوں نے پہلے حریت راہنماؤں اور ہم سے مشاورت کی اور کشمیر بارے جو مؤقف ہم نے لکھ کر دیا انہوں نے وہی جنرل اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے پیش کیا،موجودہ وزیراعظم خاقان عباسی نے بھی ایسے ہی کیا ہے۔آزاد کشمیر کی حکومت پاکستان کی وزارتِ داخلہ کے ساتھ مسلسل رابطے میں رہتی ہے اور کشمیر بارے تازہ ترین حالات پر تبادلہ ہوتا رہتا ہے،ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ بھارت سے کبھی بھی دوستی نہیں ہو سکتی کیونکہ پاکستان کی بنیاد دو قومی نظریہ کی وجہ سے رکھی گئی تھی۔ہاں البتہ ہمسایہ ملک ہونے کے ناطے باہمی تعلقات رکھے جا سکتے ہیں اس میں کو ئی حرج نہیں،آزاد کشمیر میں جب سے مسلم لیگ ن کی حکومت بنی ہے ہم نے سب سے پہلے ریاست کے تمام اضلاع کو ملانے والی شاہراؤں پر کام شروع کر دیا ہے اسکے بعد دیگر سڑکوں کی مرمت کا کام شروع کیا جائے گا،محکمہ صحت میں بہتری لا کر ہسپتالوں کی حالت زار کو بہتر بنا رہے ہیں،حکومت کے آئندہ ساڑھے تین سالوں میں ریاست میں تبدیلیاں نظر آئیں گی،وفاقی حکومت نے آزادکشمیر کے بجٹ میں سو فیصد اضافہ کیا ہے جس پر ہم ان کے مشکور ہیں،آزاد کشمیر میں حلقہ بندیوں اور دیگر پیچیدگیوں کی وجہ سے بلدیاتی انتخابات التواء کا شکار ہیں لیکن جلد انہیں حل کر کے بلدیاتی انتخابات کروانے جائیں گے۔اس میں وزیراعظم راجہ فاروق حیدر اور ہماری جماعت سنجیدہ ہے۔اس موقع پر کونسلر عتیق الرحمن،چوہدری محمد بشیر رٹوی،راجہ مقصود حسین کاکڑوی،راجہ صغیر،راجہ عاشق کے علاوہ دیگر بھی موجود تھے۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر