مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
کمیونٹی کی تقسیم سے سیاسی جماعتوں کو تو فائدہ ہوسکتاہے لیکن کشمیرکاز کونہیں: سابق سپیکرآزادکشمیر
لوٹن ... ممتازسیاسی و سماجی شخصیت اورمسلم لیگ آزاد کشمیربرطانیہ کے رہنماء سید حسین شہید سرورنے آزادکشمیرکے سابق سپیکر اور مسلم لیگ نوازگروپ آزادکشمیرکے سیکرٹری جنرل شاہ غلام قادرکے اعزازمیں ایک مقامی ریسٹورنٹ ’’استنبول گرل‘‘ میں پرتکلف عشائیہ دیا۔ اس موقع پر مسلم لیگ ن آزادکشمیربرطانیہ کے صدرراجہ زبیراقبال کیانی، جاوید اقبال بٹ، راجہ شفیق خان، کاؤنٹی کونسلر اورسابق میئرمحمد سلیم چوہدری ، سابق کونسلر راجہ الیاس ایڈوکیٹ، کشمیری دانشور ساجد راجہ ، راجہ مروت، راجہ امتیازخان، کاروبای شخصیت راجہ سفارش خان، راجہ اورنگزیب خان، چوہدری اصغرپوٹھی، شیرازخان(اینکرپرسن)، ڈاکٹر محمود شاہ، مرزا توقیر جرال، ڈاکٹر طاہر لون، جہانگیر خان جے۔پی، میاں مظہرقریشی، زاہد قریشی، نثارراجہ، چوہدری منیرحسین، شیرازچوہدری اور شاہد حسین سید بھی موجود ہیں۔مسلم لیگ ن آزادکشمیرکے سیکرٹری جنرل شاہ غلام قادر نے کہاکہ ہم مسئلہ کشمیرکے سیاسی اور پرامن حل پر یقین رکھتے ہیں۔ مسئلہ کشمیراقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے چارٹر پر موجود ہے۔ ہم وزیراعظم پاکستان نوازشریف کوخراج تحسین اورتبریک پیش کرتے ہیں کہ انھوں نے مسئلہ کشمیرکو موثر اندازمیں اقوام متحدہ میں پیش کیا۔ انھوں نے کہاکہ سابق صدرآصف علی زرداری نے کبھی بھی اقوام متحدہ میں کشمیرکا ذکر نہیں کیا ۔ شاہ غلام قادرنے کہاکہ آزادکشمیرمیں عوام برادریوں میں تقسیم نہیں اور اسی وجہ سے برادریوں کے جھگڑے کم ہیں جبکہ برطانیہ میں کشمیری کیونٹی برادریوں میں تقسیم ہے اور اس سے کشمیرکاز کو نقصان پہنچ رہاہے۔کمیونٹی کی تقسیم سے سیاسی جماعتوں کو تو فائدہ ہوسکتاہے لیکن کشمیرکاز کونہیں۔ انھوں نے کہاکہ بھارت کا یہ پروپگنڈا غلط ہے کہ پاکستان دہشت گردی کی حمایت کررہاہے اور آئندہ سال افغانستان سے غیرملکی فوجیوں کے انخلاء کے بعد طالبان کشمیرکا رخ کریں گے۔ بھارت سراسر جھوٹ سے کام لے رہاہے۔ انھوں نے برطانیہ میں مقیم کشمیری اورپاکستانی کمیونٹی کے مابین اتحاد پر زوردیا اور کہاکہ اگر کمیونٹی متحد ہوجائے تو مسئلہ کشمیرکی حمایت میں ایک ملین مارچ نکالاجاسکتاہے۔ انھوں نے زوردیاکہ کانفرنسوں اور سیمیناروں سے مسئلہ کشمیرکو اجاگرکیاجائے۔ اس موقع پر تقریب کے میزبان اورلیوٹن میں مقیم مسلم لیگ نواز آزاد کشمیر کے رہنماء سید حسین شہید سرورنے کہاکہ وزیراعظم میاں نوازشریف نے عالمی سطح پرمسئلہ کشمیرکو اجاگر کرکے پورا حق اداکیا۔ عالمی برادری کو چاہیے کہ مسئلہ کشمیرپر قراردادوں پرعمل درآمد کرائے۔ انھوں نے کہاکہ مسلم لیگ آزادکشمیر راجہ فاروق حیدر اور شاہ غلام قادر کی قیادت میں متحد ہے۔برطانیہ مسلم لیگ ن آزاد کشمیرکے صدر راجہ زبیر کیانی نے بھی کمیونٹی کے مابین اتحاد پرزوردیا۔ پاکستان سے آئے ہوئے مہمان جاوید اقبال بٹ نے بھی اظہارخیال کرتے ہوئے کہاکہ مسئلہ کشمیرخطے میں بنیادی حیثیت رکھتا ہے۔یہ مسئلہ مذاکرات کے ذریعے طے ہوناچاہیے۔ کشمیری دانشور ساجد راجہ نے کہاکہ عالمی طاقتوں کو مسئلہ کشمیرکے حل لیے کرداراداکرناہوگا۔کونسلر محمد سلیم چوہدری نے اووسیزپاکستانیوں اور کشمیریوں کے مسائل کے حل کا مطالبہ کیااور کہاکہ اوورسیز کمیونٹی کی مشکلات کا ازالہ کیاجائے۔سابق کونسلر راجہ الیاس ایڈوکیٹ نے کہاکہ آزادکشمیرمیں لوگوں کو قبضہ مافیا سے نجات دلائی جائے۔ آزاد کشمیرکے ایک اور لیگی رہنماء راجہ امتیازخان نے کہاکہ کشمیری آپس میں متحد ہوجائیں۔کاروباری شخصیت راجہ مروت خان نے سید حسین شہید سرورکو تقریب کے انعقاد پرخراج تحسین پیش کیا۔ آخر میں شرکاء نے سابق صدور و وزرائے اعظم سردار سکندرحیات خان اور سردار عبدالقیوم خان اور سابق وزیرتعلیم چوہدری نورحسین کی صحت یابی اور درازی عمر کے لیے دعاء کی گئی ۔