مقبول خبریں
پاکستانی کمیونٹی سنٹر اولڈہم میں بیڈمنٹن ٹورنامنٹ کا انعقاد، برطانیہ بھر سے 20 ٹیموں کی شرکت
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
ہم دھوپ میں بادل کی، درختوں کی طرح ہیں!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
آزادکشمیر حکومت لوگوں کے جان و مال کے تحفظ میں مکمل ناکام ہو چکی: ڈاکٹر مسفر حسن
برنلے:آزادکشمیر حکومت لوگوں کے جان و مال کے تحفظ میں مکمل طور پر ناکام ہو چکی ہے،لائن آف کنٹرول پر بسنے والے لوگوں کا مسلسل فائرنگ کی وجہ سے کوئی پرسان حال نہیں،صدر آزاد کشمیر سردار مسعود آئے روز دعوتیں کھانے برطانیہ و یورپ پہنچ جاتے ہیں، جموں کشمیر لبریشن لیگ برطانیہ و یورپ کے صدر ڈاکٹر مسفر حسن نے گزشتہ کئی ماہ سے جاری گولہ باری اور فائرنگ جس نے لائن آف کنٹرول پر بسنے والے لوگوں کی زندگیاں اجیرن کر رکھی ہیں پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس فائرنگ کے نتیجے میں بے شمار لوگ موت کے منہ میں جا چکے،بے شمار زخمی اور معذور ہو چکے ہیں لیکن ان لوگوں کی مشکلات کے ازالے کیلئے حکومت آزاد کشمیر نے کوئی اقدام نہیں کئے،متاثرہ علاقوں میں علاج کو کوئی معقول سہولت میسر نہیں،زخمیوں کو بروقت ہسپتال پہنچانے کا کوئی انتظام موجود نہیں اور حکومتی ذمہ دار اور سرکاری ملازمین اسلام آباد میں موج کر رہے ہیں،انہوں نے کہا کہ مشکل میں گھرے عوام سوشل میڈیا کے ذریعے دنیا میں آباد کشمیریوں سے مدد کیلئے پکار رہے ہیں جبکہ صدر آزاد کشمیر ہر دوسرے روز برطانیہ و یورپ میں دعوتیں کھانے آ جاتے ہیں اور انکے ان بے مقصد دوروں سے کشمیری عوام یا انکی تحریک کو کسی قسم کا کوئی فائدہ ہوتا دکھائی نہیں دیتا انہوں نے کہا کہ برطانوی اراکین پارلیمنٹ ہم سے یہ سوال پوچھتے ہیں کہ صدر آزاد کشمیر ہمیں کون سی ایسی بات بتانے آئے ہیں جسکا ہمیں علم نہیں کیونکہ برطانوی کشمیری انہیں ہر معاملے سے آگاہ رکھتے ہیں تو ہمارے پاس ان سوالات کا کوئی جواب نہیں ہوتا انہوں نے کہا کہ صدر آزاد کشمیر کے ان بے مقصد دوروں پر اٹھنے والے اخراجات سے کنٹرول لائن پر متاثرہ لوگوں کو علاج اور ایمبو لینس کی سہولیات کم از کم مہیا کی جا سکتی ہیں،انہوں نے کہا کہ حکومت آزاد کشمیر کے نمائندوں کو اپنے عوام کی فلاح و بہبود پر توجہ دینی چاہئے اس سے قبل کے لوگ مایوس ہو کر انتہائی اقدام اٹھانے پر مجبور ہو جائیں۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر