مقبول خبریں
مکس مارشل آرٹ کونسل اور چیریٹی آرگنائزیشن کے زیر اہتمام تقریب کا انعقاد
بریگزیٹ بحران :کنزرویٹو پارٹی کی تین خواتین ممبر کی آزاد گروپ میں شمولیت
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
میئرآف لوٹن (برطانیہ) نے شاہد حسین سید کو کمیونٹی سروسز پر شیلڈ پیش کی
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
راجہ نجا بت حسین کی صدر آزاد کشمیر سردار مسعود اور وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر سے ملاقات
میں روشنی سے اندھیرے میں بات کرتا ہوں!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
ایران،ہندوستان معاہدہ سے گوادر کی بندر گاہ کو نقصان پہنچ سکتا ہے:ڈاکٹر مسفر
برنلے:جموں کشمیر لبریشن لیگ برطانیہ و یورپ گزشتہ ہفتے ایران اور ہندوستان کے درمیان چاہ بہار بندر گاہ کو اٹھارہ ماہ کیلئے لیز پر دیئے جانے کو انتہائی تشویش کی نگاہ سے دیکھتی ہے،ان خیالات کا اظہار ڈاکٹر مسفر حسن صدر لبریشن لیگ برطانیہ و یورپ نے کیا،انہوں نے کہا کہ ایران اور ہندوستان کے درمیان ہونے والے حالیہ معاہدے جس میں ایرانی حکومت نے چاہ بہار کی بندر گاہ اٹھارہ ماہ کے لئے لیز پر ہندوستان کو دے دیا ہے اس سے گوادر کی بندر گاہ کے مستقبل کو نقصان پہنچ سکتا ہے،ڈاکٹر مسفر نے کہا کہ پاکستان کی موجودہ سیاسی افراتفری کی صورتحال سے ہندوستان کے حکمران بھرپور فائدہ اٹھا رہے ہیں اور حالیہ ایران ہندوستان معاہدہ جس میں افغانستان بھی ان ممالک کے ساتھ شامل ہے اس حکومت پاکستان خطے میں تنہا ہوتی نظر آ رہی ہے جو جموں و کشمیر کے لوگوں کے لئے انتہائی تشویش ناک بات ہے،انہوں نے کہا کہ اس صورتحال سے بچنے کیلئے اور کشمیریوں کی تحریک کو تقویت دینے کیلئے نئی حکمت عملی کی ضرورت ہے جس میں مظفر آباد حکومت کو با اختیار بنانے کا عمل بنیادی نقطہ ہو گا،اس کے علاوہ پر امن سیاسی جدو جہد کو آگے بڑھانے کیلئے اقدامات کی ضرورت ہے،اگر پاکستان کے حکمرانوں نے حالات کا نذاکت کو نہ سمجھا تو پھر ملک اور قوم اور کشمیری عوام کیلئے بھی انتہائی مشکلات درپیش ہونے کے اندیشے نظر آ رہے ہیں۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر