مقبول خبریں
راچڈیل مساجد کونسل کی طرف سے مئیر کونسلر محمد زمان کی مئیر چیرٹیز کیلئے فنڈ ریزنگ ڈنر کا اہتمام
اوورسیز پاکستانیوں کے لئے خصوصی سیل بنایا جانا چاہئے: سلیم مانڈوی والا
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
برطانیہ میں آباد تارکین وطن کی مسئلہ کشمیر پر کاوشیں قابل تحسین ہیں:چوہدری محمد سرور
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
کشمیریوں کو ان کا حق دیئے بغیر خطے میں پائیدار امن کا حصول ممکن نہیں: راجہ نجابت حسین
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
برطانیہ میں مقیم کشمیری و پاکستانی 16مارچ کو بھارت کے خلاف مظاہرہ کریں گے: راجہ نجابت حسین
وہ بے خبر تھا سمندر کی بے نیازی سے!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
فاروق ستار کنوینرشپ سے فارغ: رابطہ کمیٹی، رابطہ کمیٹی برطرف: فاروق ستار
کراچی: عامر خان گروپ کا بڑا اعلان، متحدہ پاکستان 2 دھڑوں میں تقسیم، فاروق ستار کو کنوینر کے عہدے سے ہٹا دیا، بتائے بغیر آئین تبدیل کر کے دھوکہ دیا گیا، الزامات کی فہرست طویل ہے، کنور نوید جمیل کی میڈیا سے گفتگو۔ایم کیو ایم پاکستان کے کنوینر فاروق ستار بے اختیار ہو گئے۔ رابطہ کمیٹی قانونی محاذ پر خود کو بااختیار ثابت کرنے میں کامیاب ہو گئی۔ الیکشن کمیشن نے ڈپٹی کنوینر خالد مقبول صدیقی کے دستخط شدہ پارٹی ٹکٹ قبول کرتے ہوئے بیرسٹر فروغ نسیم اور نسرین جلیل کے کاغذات نامزدگی منظور کر لئے۔کاغذات نامزدگی کی سکرونٹی کے دوران بیرسٹر فروغ نسیم نے صوبائی الیکشن کمشنر کو پارٹی آئین پیش کیا۔ انہوں نے مؤقف اپنایا کہ پارٹی آئین کے مطابق ٹکٹ جاری کرنے کا اختیار رابطہ کمیٹی کے پاس ہے۔بیرسٹر فروغ نسیم اور نسرین جلیل کے کاغذات نامزدگی کی منظوری کے بعد فاروق ستار بھی الیکشن کمیشن آفس پہنچے۔ انہوں نے صوبائی الیکشن کمشنر کو پارٹی آئین کا آرٹیکل 6 اے اور 7 اے پڑھ کر سنایا۔ ان کا مؤقف تھا کہ وہ بطور کنوینر پارٹی ٹکٹ جاری کر سکتے ہیں۔ انہوں نے ٹکٹ کے ساتھ کنوینر کے توثیقی لیٹر کے ناگزیر ہونے پر بھی اصرار کیا۔ فاروق ستار کا کہنا تھا کہ وہ قانونی چارہ جوئی کا حق رکھتے ہیں۔صوبائی الیکشن کمشنر نے فاروق ستار کا مؤقف مسترد کرتے ہوئے واضح کیا کہ رابطہ کمیٹی نے ڈپٹی کنوینر کو ٹکٹ جاری کرنے کا اختیار دیا ہے، اس لئے خالد مقبول صدیقی کے دستخط والے ٹکٹ ہی منظور کئے گئے ہیں۔الیکشن کمیشن کے باہر میڈیا سے بات کرتے ہوئے فاروق ستار نے کہا کہ ڈپٹی کنوینر کا کام مدد کرنا ہے، ٹکٹ دینے کا اختیار غلط استعمال ہوا تو واپس لے سکتا ہوں، رابطہ کمیٹی کے اجلاس چیلنج بھی ہو سکتے ہیں۔ بہادر آباد گروپ کو کھری کھری سنانے اور قانونی چارہ جوئی کی دھمکی دینے کے ساتھ ساتھ ڈاکٹر فاروق ستار نے یہ بھی کہا کہ گزشتہ شب طے کئے گئے فارمولے پر عملدرآمد کا عہد نبھاؤں گا۔ ہم سفر کا ہم نوا ہونا مشکل ہو گیا۔ متحدہ پی آئی بی اور بہادر آباد میں قربت کے بعد پھر دوریوں کے سائے لہرانے لگے۔ عامر خان گروپ نے فاروق ستار کے جنرل ورکرز اجلاس کو غیرآئینی قرار دیدیا۔ شرکت نہ کرنے کا فیصلہ بھی کر لیا۔