مقبول خبریں
پاکستان میں صاف پانی کی سہولت کو ممکن بنانے کیلئے مختلف منصوبوں پر کام کرونگی:زارہ دین
پیپلزپارٹی کے رہنما ندیم اصغر کائرہ کی پریس کانفرنس ،صحافیوں کے سوالات کے جوابات دیئے
واجد خان ایم ای پی کا آزاد کشمیر سے آئے حریت کانفرنس کے رہنمائوں کے اعزاز میں عشائیہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے زیر اہتمام پہلی کشمیر کلچرل نمائش کا اہتمام
دسمبر بے رحم اتنا نہیں تھا!!!!!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
وزیر اعظم آزاد کشمیر ایک ناکارہ پرزے سے زیادہ کی حیثیت نہیں رکھتے:ڈاکٹر مسفر حسن
برنلے:جہلم ویلی ہٹیاں بالا میں ڈی سی کی ہدایات پر پروفیسر جمیل پر پولیس کے بے ہیمانہ تشدد کی بھرپور مذمت کرتے ہیں،وزیر اعظم آزاد کشمیر ایک ناکارہ پرزے سے زیادہ کی حیثیت نہیں رکھتے،ایکٹ74اور شملہ معاہدے کی فوری منسوخی کشمیریوں کی آزادی کا راستہ ہموار کر سکتی ہے جلد بین الاقوامی سطح پر بھرپور مہم کا آغاز کیا جائے گا،ڈاکٹر مسفر حسن صدر لبریشن لیگ برطانیہ و یورپ،جہلم ویلی آزاد کشمیر کے پروفیسر پر صرف اس بات پر ڈی سی مظفر آباد کے حکم پر پولیس کے بیمانہ تشدد کہ پروفیسر مذکو اے ڈی سی کو درخواست دی تھی پبلک ٹرانسپورٹ گاڑیوں میں تمباکونوشی پر پابندی عائد کی جائے نہ صرف موجودہ حکومت کی ابتر کارکردگی کا ثبوت ہے بلکہ یہ اس امر کا واضع ثبوت ہے کہ پاکستان کے زیر انتظام کشمیر میں بڑی برادریوں کے لوگ چھوٹی برادریوں کے لوگوں کے ساتھ کیا سلوک کر رہے ہیں اور وزیر اعظم آزاد کشمیر برادری کے ہاتھوں یرغمال اور مجبور و بے بس ہو چکے ہیں اس ضمن میں انہوں نے ایکٹ74نے مظفرآباد اسمبلی کو ایک ناکارہ پرزہ بنا دیا ہے،جہاں کرپشن بد عنوانی اور کمیشن مافیا کا قبضہ ہے،انہوں نے کہا کہ پاکستان کے حکمرانوں نے شملہ معاہدہ کر کے کشمیر کے مسئلہ کو دو طرفہ معاملے میں تبدیل کر کے کشمیری عوام کے ساتھ غداری کا ارتکاب کیا ہے اس ضمن میں انہوں نے کہا کہ اگر حکومت پاکستان کشمیری عوام کے ساتھ انکے حق خود ارادیت کے معاملے میں مخلص ہے تو وہ فوری طور پر ایکٹ74شملہ معاہدے اور کراچی معاہدے کو منسوخ کر کے آزاد کشمیر بشمول گلگت بلتستان پر پوری ریاست کی نمائندہ حکومت قائم کر کے کشمیریوں کی حکومت کو با اختیار اور نمائندہ حکومت تسلیم کرے،اگر یہ اقدامات نہیں کئے جاتے تو نام نہاد یکجہتی کا دن منا کر پاکستانی اور کشمیری قوم کو اربوں روپے کا نقصان پہنچا کر کشمیریوں کا کوئی فائدہ نہیں کیا جا رہا،اس ضمن میں بہت جلد مہم کا آغاز کیا جائے گا تاکہ بین الاقوامی دنیا کو زمینی حقائق سے با خبر کیا جائے۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر