مقبول خبریں
ن لیگ برطانیہ و یورپ کا نواز شریف،مریم نواز اور کیپٹن صفدر کی سزائیں معطل ہونے پر اظہار تشکر
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
ہم دھوپ میں بادل کی، درختوں کی طرح ہیں!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی فائرنگ،2زخمی،احتجاج،مظاہرے،انٹر نیٹ بھی معطل
سرینگر:مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی نجی گاڑی پر فائرنگ سے خاتون سمیت دو افراد زخمی ہوگئے ، یاسین ملک،سید علی گیلانی،میر واعظ اور عباس انصاری سمیت اہم رہنما گھروں میں بدستور نظر بند ہیں ،وادی کے کئی مقامات پراحتجاج اور مظاہرے ہوئے جبکہ کاروباری مراکز اور تجارتی ادارے بند،انٹر نیٹ،موبائل اور ریل سروس معطل رہی ۔مقبوضہ کشمیر میں مقامی میڈیا کے مطابق اتوار کو سرینگر کے علاقے زین کوٹ میں بھارتی فوج کے اہلکاروں نے چیک پوسٹ پر ایک پرائیویٹ گاڑی پر فائرنگ کر دی جس کے نتیجے میں ادھیڑ عمر خاتون سمیت دو افراد زخمی ہو گئے ۔ عینی شاہدین بھارتی فوج کے اہلکاروں نے چیک پوست پر گاڑی روک کر اس میں سوار دو افراد کو نیچے اترنے کا کہا جس پر گاڑی میں سوار شخص نے خاتون کو نیچے اترنے سے روک دیا اور اہلکاروں نے توتکار کے بعددونوں پر فائرنگ کر دی۔ واقعہ کے بعد مقامی لوگوں کی بڑی تعداد نے باہر نکل کر احتجاج کیا۔زخمیوں کی شناخت عبدالعزیز لاوئے ساکن پارمپورہ اور سعیدہ سلام ساکن ملورہ شالہ ٹینگ کے طور پر ہوئی۔ دریں اثناء وادی کے مختلف علاقوں میں ہڑتال اور احتجاجی مظاہروں کے باعث نظام زندگی معطل رہا ۔سرینگر سمیت کئی اضلاع میں دکانیں ،کاروباری ادارے ، بازار، بینک، تعلیمی ادارے او رغیر سرکاری دفاتر بند رہے جبکہ سڑکوں سے پبلک ٹرانسپورٹ جزوی طور غائب رہی ۔سول لائنز کے لال چوک ،ریگل چوک ،کوکر بازار ، کورٹ روڈ ،بڈشاہ چوک ،ہری سنگھ ہائی اسٹریٹ ،مہاراجہ بازار ،بٹہ مالو اور دیگر اہم بازاروں میں تمام دکانیں اور کاروباری ادارے مقفل رہے اور ٹرانسپورٹ سروس معطل رہی۔دھر صورہ کے اونتہ بھون علاقے میں فورسز اہلکاروں اور ٹاسک فورس نے محاصرہ کیا اور بعد میں گھر گھر تلاشیاں بھی لیں۔جنوبی کشمیر میں بھی مکمل ہڑتال سے عام زندگی مفلوج ہوکر رہ گئی۔