مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی فائرنگ،2زخمی،احتجاج،مظاہرے،انٹر نیٹ بھی معطل
سرینگر:مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی نجی گاڑی پر فائرنگ سے خاتون سمیت دو افراد زخمی ہوگئے ، یاسین ملک،سید علی گیلانی،میر واعظ اور عباس انصاری سمیت اہم رہنما گھروں میں بدستور نظر بند ہیں ،وادی کے کئی مقامات پراحتجاج اور مظاہرے ہوئے جبکہ کاروباری مراکز اور تجارتی ادارے بند،انٹر نیٹ،موبائل اور ریل سروس معطل رہی ۔مقبوضہ کشمیر میں مقامی میڈیا کے مطابق اتوار کو سرینگر کے علاقے زین کوٹ میں بھارتی فوج کے اہلکاروں نے چیک پوسٹ پر ایک پرائیویٹ گاڑی پر فائرنگ کر دی جس کے نتیجے میں ادھیڑ عمر خاتون سمیت دو افراد زخمی ہو گئے ۔ عینی شاہدین بھارتی فوج کے اہلکاروں نے چیک پوست پر گاڑی روک کر اس میں سوار دو افراد کو نیچے اترنے کا کہا جس پر گاڑی میں سوار شخص نے خاتون کو نیچے اترنے سے روک دیا اور اہلکاروں نے توتکار کے بعددونوں پر فائرنگ کر دی۔ واقعہ کے بعد مقامی لوگوں کی بڑی تعداد نے باہر نکل کر احتجاج کیا۔زخمیوں کی شناخت عبدالعزیز لاوئے ساکن پارمپورہ اور سعیدہ سلام ساکن ملورہ شالہ ٹینگ کے طور پر ہوئی۔ دریں اثناء وادی کے مختلف علاقوں میں ہڑتال اور احتجاجی مظاہروں کے باعث نظام زندگی معطل رہا ۔سرینگر سمیت کئی اضلاع میں دکانیں ،کاروباری ادارے ، بازار، بینک، تعلیمی ادارے او رغیر سرکاری دفاتر بند رہے جبکہ سڑکوں سے پبلک ٹرانسپورٹ جزوی طور غائب رہی ۔سول لائنز کے لال چوک ،ریگل چوک ،کوکر بازار ، کورٹ روڈ ،بڈشاہ چوک ،ہری سنگھ ہائی اسٹریٹ ،مہاراجہ بازار ،بٹہ مالو اور دیگر اہم بازاروں میں تمام دکانیں اور کاروباری ادارے مقفل رہے اور ٹرانسپورٹ سروس معطل رہی۔دھر صورہ کے اونتہ بھون علاقے میں فورسز اہلکاروں اور ٹاسک فورس نے محاصرہ کیا اور بعد میں گھر گھر تلاشیاں بھی لیں۔جنوبی کشمیر میں بھی مکمل ہڑتال سے عام زندگی مفلوج ہوکر رہ گئی۔