مقبول خبریں
کشمیر سالیڈیرٹی کیلئے یکم فروری سے 11فروری تک تقریبات منعقد کرائی جائیں گی
پیپلزپارٹی کے رہنما ندیم اصغر کائرہ کی پریس کانفرنس ،صحافیوں کے سوالات کے جوابات دیئے
واجد خان ایم ای پی کا آزاد کشمیر سے آئے حریت کانفرنس کے رہنمائوں کے اعزاز میں عشائیہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے زیر اہتمام پہلی کشمیر کلچرل نمائش کا اہتمام
دسمبر بے رحم اتنا نہیں تھا!!!!!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
ہم مزید برطانوی بھارتیوں کوسیاست میں دیکھنا چاہتے ہیں، دیوالی تقریب سے کیمرون کا خطاب
لندن ...دنیا بھر کی طرح برطانیہ اور امریکہ دو ایسے ممالک ہیں جہاں پوری دنیا سے ہر رنگ نسل اور قومیت کے لوگ آباد ہیں جو ناصرف خود اپنے تہوار مناتے ہیں بلکہ حکومتی سرکردہ شخصیات کو مدعو کرنا اعزاز سمجھتے ہیں۔ یہ مسلمان ہوں، ہندو، سکھ، عیسائی یا یہودی ہوں سب کی کوشش ہوتی ہے کہ دیار غیر میں بھی ان کا تہوار پورے احترام سے منایا جائے۔ ہندو قوم کا ایسا ہی تہوار دنیا بھر میں منایا گیا۔ امریکی صدر اوبامہ اور انکی اہلیہ مشعل اوبامہ نے ہر سال کی طرح اس سال بھی اس تہوار کو انجوائے کیا جبکہ برطانوی وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون نے اپنی اہلیہ سمانتھا کے ہمراہ لندن کے معروف شری سوامی نارائن مندر میں منعقدہ دیوالی کی تقریب میں حصہ لیا۔ اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بھارتی کمیونٹی کوبرطانوی زندگی میں اپنی اقدارکو فروغ دینے میں مزید کردار ادا کرنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ یہ خوش آئند بات ہے کہ زیادہ سے زیادہ بھارتی برطانوی سیاست میں حصہ لے رہے ہیں اور ہم چاہتے ہیں کہ وہ برطانوی حکومت میں مزید شامل ہوں۔ ہم پارلیمنٹ میں مزید بھارتی برطانویوں کی نمائندگی چاہتے ہیں۔ اس سے قبل مندر میں داخل ہونے سے پہلےبرطانوی وزیر اعظم اور ان کی اہلیہ نے احتراماً اپنے جوتے اتاردیئے اور ان کے ماتھے پر روائتی تلک لگایا گیا۔