مقبول خبریں
عمران لورز برطانیہ کا قصور میں زینب کے قتل اور زیادتی کے خلاف احتجاجی مظاہرہ
سانحہ قصور:سمائل ایڈ کے زیر اہتمام افضل خان ایم پی اور ناز شاہ ایم پی کے زیر صدارت تقریب
پاک برٹش انٹر نیشنل ٹرسٹ کے چیئرمین چوہدری سرفراز کی جانب سے عشائیہ کی تقریب
آشیانہ ہاؤسنگ سکیم میں مبینہ کرپشن، نیب نے وزیر اعلیٰ شہباز شریف کو طلب کر لیا
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی فائرنگ،2زخمی،احتجاج،مظاہرے،انٹر نیٹ بھی معطل
کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی پامالیوں کو رکوانے کے سلسلہ میں پروگرام کا انعقاد
برطانیہ کے ساحلی شہر سائوتھ ہیمپٹن میں ملی نغموں کی گونج، ڈپٹی میئر کی خصوصی شرکت
برطانیہ کے کسی بھی پہلے ڈپٹی مئیر کا دورہ سپین،شاندار استقبال کیا گیا
یروشلم بطور اسراییلی دارلحکومت اور مسلمانوں کا ردِعمل
پکچرگیلری
Advertisement
‎شعور اور لاشعور کے درمیان پردہ کو ریاضت اور کوشش سے ہٹایا جا سکتا ہے ۔خواجہ شمس الدین عظیمی
‎اولڈہم:حضور قلندر بابا اولیاء کے انتالیسویں عرس مبارک کے حوالے سے ایک پروقار روحانی تقریب کا انعقاد اولڈہم کے مقامی ہال میں کیا گیا۔ تقریب کا انعقاد سلسلہ عظیمیہ کے اولڈہم مراقبہ ہال کی جانب سے کیا گیاتھا تقریب میں سلسلہ عظیمیہ کے مریدین اور گریٹر مانچسٹر سے کئی کمیونٹی عمائدین نے شرکت کی۔ اس موقعہ پر سلسلہ عظیمیہ کے روحانی پیشوا خواجہ شمس الدین عظیمی نے کراچی سے بذریعہ ویڈیو لنک شرکاء سے خطاب کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ شعور اور لاشعور کے درمیان پردہ کو ریاضت اور کوشش سے ہٹایا جا سکتا ہے ۔ اللہ کی محبت کا جذبہ جتنا مستحکم ہوتا ہے، لاشعور اتنا ہی قوی ہوتا ہے۔ ۔ عرس آرگنائزر محمد صدیق عظیمی کا کہنا تھا روح اور انسان کے تعلق کو معلوم کرنے کے لیے روحانی علم سے بہتر کوئی علم نہیں ہوسکتا۔ انسان کو اپنی اصل شناخت کو حاصل کرنے اور پہچاننے کے لیے روحانیت اور غیب کے علوم تک دسترس حاصل کرنی ہو گی جو کہ اولیاء اللہ کے قرب اور تدریس سے حاصل ہوتی ہے۔ ‎ شرکاء جن میں مسرت چوہان، راشد علی، ڈاکٹر عمران خان، مرزا بشیر شامل تھے نے روحانیت سے متعلقہ اس منفرد تقریب کو بے حد سراہا جس میں قران و حدیث کی روشنی میں انسان کو دنیا میں آنے کے مقاصد اور اس کی ذمہ داریوں کے حوالے سے بتایا گیا تھا۔تقریب میں بچوں کو روحانیت اور اولیا اللہ کی اسلام کے حوالے سے کی جانے والے خدمات، اسلام کا اصلی پیغام اور تشخص پر لیکچر بھی دیا گیا جسے نوجوانوں نے بہت پسند کیا۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر