مقبول خبریں
اولڈہم ٹاؤن میں پہلی جنگ عظیم کی صد سالہ تقریب،جم میکمان،مئیر کونسلر جاوید اقبال و دیگر کی شرکت
مشتاق لاشاری سی بی ای کا پورٹریٹ کونسل ہال میں لگا نے کی تقریب، بیگم صنم بھٹو نے نقاب کشائی کی
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
پارلیمنٹ میں مسئلہ کشمیر بھرپور طریقے سے اٹھایا جائیگا :برطانوی و یورپی ممبران پارلیمنٹ
بریڈ فورڈ:جنوری میں برطانوی اور یورپی پارلیمنٹ میں مسئلہ کشمیر بھرپور طریقے سے اٹھایا جائے گا،اقوام متحدہ5جنوری1949کی اپنی قرارداد کے مطابق ریاست جموں و کشمیر میں استصواب رائے کا اہتمام کرے اور بھارتی مظالم بند کروانے کیلئے برطانوی حکومت اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے جبکہ بھارت سے تجارتی معاہدے کرتے وقت مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق سے مشروط کرے،ان خیالات کا اظہار کنزرویٹو پارٹی کے یارکشائر سے یورپی ممبر پارلیمنٹ امجد بشیر اور بریڈ فورڈ ویسٹ سے لیبر رکن پارلیمنٹ ناز شاہ نے یوم حق خود ارادیت کے موقع پر جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے چیئرمین راجہ نجابت حسین کے ہمراہ بریڈ فورڈ میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کیا،دونوں ارکان پارلیمنٹ نے اقوام متحدہ اور عالمی برادری کو اپنی ذمہ داریوں سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ مسئلہ کشمیر پر اقوام متحدہ کی قراردادوں کی گزشتہ ستر سالوں میں عملدرآمد نہ ہونے سے عالمی برادری کی دوغلی پالیسیوں کا اظہار ہوتا ہے جبکہ اس سارے عرصے میں بھارت نے نہ صرف ریاست کے مختلف علاقوں میں لاکھوں کشمیریوں کو شہید کیا وہاں انسانی حقوق کی مسلسل خلاف ورزیوں،سیاسی لیڈر شپ کے قتل اور ہزاروں نوجوانوں کو غائب کر کے عالمی قوانین کی مسلسل خلاف ورزی کی ہے جس پر نہ صرف برطانوی اور یورپی حکومتوں کو نوٹس لینا چاہئے بلکہ ایک ملین سے زائد برٹش کشمیریوں کی وجہ سے برطانوی حکومت کو مسئلہ کشمیر کے پر امن حل میں کھل کر معاونت کرنی چاہئے اور کامن ویلتھ کے سربراہ کی حیثیت سے بھارت،پاکستان اور کشمیریوں کو ایک پلیٹ فارم پر جمع کر کے اس مسئلے کے حل میں اپنا کلیدی کردار ادا کرنا چاہئے،ناز شاہ ایم پی نے کہا کہ انہوں نے جنوری2017کی بحث میں بھی حصہ لیا تھا اور کشمیر پارلیمنٹری گروپ کی مشاورت سے بہت جلد2018میں بھی بحث کیلئے کوششیں کریں گی،انہوں نے کہا کہ حالیہ عام انتخابات میں لیبر پارٹی کے لیڈر جیریمی کوربن نے میرے حلقے میں انتخابی منشور میں مسئلہ کشمیر کو شامل کر کے کشمیریوں کی بھرپور ترجمانی کا حق ادا کیا،یورپی پارلیمنٹ کے مملر امجد بشیر نے کہا کہ وہ پارلیمنٹ میں انسانی حقوق اور خارجہ امور کی کمیٹی میں شامل ہیں اور انہوں نے اپنے دورہ اقوام متحدہ کے موقع پر سیکرٹری جنرل اور جنیوا میں انسانی حقوق کونسل میں جہاں کشمیری عوام کے حقوق کی بات کی وہاں پر برسلز میں بھی بھارتی سفیر کی موجودگی میں مقبوضہ کشمیر یمں انسانی حقوق کا مسئلہ اٹھایا جبکہ کنزرویٹو پارٹی کی وائس چیئرپرسن انتھیا میکنٹائر اور لیبر گروپ لیڈر رچرڈ کوربٹ ایم ای پی سے ملکر جنوری کے آخری ہفتے میں دو روزہ کشمیر کانفرنس کیلئے بھی معاونت کر رہے ہیں جبکہ تحریکی عہدیداروں سے مل کر2018میں ہر محاذ پر معاونت جاری رکھیں گے،اس موقع پر راجہ نجابت حسین نے پاتمام کشمیر دوست ممبران پارلیمنٹ خصوصاً یارکشائر اور نارتھ ویسٹ کے ممبران پارلیمٹ کی بلا امتیاز سیاسی وابستگی متحد ہو کر مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے کاوشوں پر خراج تحسین پیش کیا اور تحریک سے معاونت پر شکریہ ادا کیا۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر