مقبول خبریں
جامع مسجد اولڈہم میں جشن عیدمیلادالنبیؐ کے حوالہ سے محفل کا انعقاد ،حامد سعید کاظمی و دیگر کی شرکت
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
آئینی حدود میں کام کر رہے ہیں، دھرنے میں فوج کا کردار نہیں تھا: آرمی چیف
اسلام آباد: ملکی تاریخ میں پہلی بار سینیٹ کو آرمی چیف کی طرف سے بریفنگ دی گئی۔ سینیٹ ہول کمیٹی کے اجلاس میں اتفاق کیا گیا کہ ملکی سلامتی اور استحکام کی خاطر سب کو مل کر چلنا ہو گا۔جنرل قمر جاوید باجوہ نے ارکان سینیٹ کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ جمہوری عمل کے ساتھ کھڑے ہیں، دھرنوں میں فوج کا کوئی کردار نہیں تھا، فوج اپنی آئینی حدود میں کام کر رہی ہے، مسلم ممالک پر پاکستان کی پالیسی غیرجانبدار ہے۔ذرائع کے مطابق، آرمی چیف نے دھرنوں میں فوج کا کردار ہونے کے تاثر کی نفی کرتے ہوئے کہا کہ دھرنے کے متعلق مسلسل اپڈیٹ لیتا رہا کیونکہ کسی بڑے سانحے سے بچنے کی خواہش تھی، دھرنے میں کسی صورت عسکری اداروں کا کردار نہیں تھا، جمہوری عمل کے ساتھ کھڑے ہیں اور فوج اپنی آئینی حدود میں کام کر رہی ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ ٹی وی پر تجزیہ کرنے والے ریٹائر افسران پاک فوج کے ترجمان نہیں۔ذرائع نے بتایا ہے کہ ملک کو درپیش بیرونی خطرات اور خارجہ پالیسی کے متعلق سوالات پر جنرل باجوہ نے کہا کہ پاکستان کو دشمن خفیہ ایجنسیوں کے گٹھ جوڑ کا سامنا ہے، بیرونی سازشوں کے متعلق جانتے ہیں، ایران اور سعودی عرب کے حوالے سے خارجہ پالیسی کے مطابق چلتے ہیں، ملکی استحکام کے لئے سب کو مل کر کام کرنا ہو گا۔