مقبول خبریں
ن لیگ برطانیہ و یورپ کا نواز شریف،مریم نواز اور کیپٹن صفدر کی سزائیں معطل ہونے پر اظہار تشکر
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
ہم دھوپ میں بادل کی، درختوں کی طرح ہیں!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
آئینی حدود میں کام کر رہے ہیں، دھرنے میں فوج کا کردار نہیں تھا: آرمی چیف
اسلام آباد: ملکی تاریخ میں پہلی بار سینیٹ کو آرمی چیف کی طرف سے بریفنگ دی گئی۔ سینیٹ ہول کمیٹی کے اجلاس میں اتفاق کیا گیا کہ ملکی سلامتی اور استحکام کی خاطر سب کو مل کر چلنا ہو گا۔جنرل قمر جاوید باجوہ نے ارکان سینیٹ کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ جمہوری عمل کے ساتھ کھڑے ہیں، دھرنوں میں فوج کا کوئی کردار نہیں تھا، فوج اپنی آئینی حدود میں کام کر رہی ہے، مسلم ممالک پر پاکستان کی پالیسی غیرجانبدار ہے۔ذرائع کے مطابق، آرمی چیف نے دھرنوں میں فوج کا کردار ہونے کے تاثر کی نفی کرتے ہوئے کہا کہ دھرنے کے متعلق مسلسل اپڈیٹ لیتا رہا کیونکہ کسی بڑے سانحے سے بچنے کی خواہش تھی، دھرنے میں کسی صورت عسکری اداروں کا کردار نہیں تھا، جمہوری عمل کے ساتھ کھڑے ہیں اور فوج اپنی آئینی حدود میں کام کر رہی ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ ٹی وی پر تجزیہ کرنے والے ریٹائر افسران پاک فوج کے ترجمان نہیں۔ذرائع نے بتایا ہے کہ ملک کو درپیش بیرونی خطرات اور خارجہ پالیسی کے متعلق سوالات پر جنرل باجوہ نے کہا کہ پاکستان کو دشمن خفیہ ایجنسیوں کے گٹھ جوڑ کا سامنا ہے، بیرونی سازشوں کے متعلق جانتے ہیں، ایران اور سعودی عرب کے حوالے سے خارجہ پالیسی کے مطابق چلتے ہیں، ملکی استحکام کے لئے سب کو مل کر کام کرنا ہو گا۔