مقبول خبریں
یوم عاشور کے حوالہ سے نگینہ جامع مسجد اولڈہم میں روح پرور،ایمان افروز محفل کا اہتمام
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
میاں جی کی لڑکیاں
پکچرگیلری
Advertisement
جسٹس باقر نجفی رپورٹ میں قتل کا حکم دینے والوں کی نشاندہی ہوئی: طاہر القادری
لاہور: ڈاکٹر طاہر القادری کا کہنا ہے عدالتی فیصلہ تاریخی ہے، 3 سال سے دہری جنگ لڑ رہے ہیں، دھرنے کے دوران ہم نے شریف برادران کا استعفیٰ مانگا تھا اور اپنے مطالبات سے پیچھےنہیں ہٹے۔سربراہ عوامی تحریک ڈاکٹر طاہر القادری نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا جسٹس باقر نجفی رپورٹ میں قاتلوں اور قتل کا حکم دینے والوں کی نشاندہی ہوئی، ہم نے دھرنا ختم کر کے قانونی جنگ کا آغاز کیا۔ انہوں نے کہا ہم نہیں چاہتے تھے کہ ان کے اقتدار میں فیصلہ ہو، کیس میں تاخیر پیدا کرنے کی حکمت عملی اپنائی گئی لیکن ہمیں یقین تھا انصاف کا راستہ کھلے گا۔ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا جسٹس باقر نجفی کمیشن کی تمام کارروائی یک طرفہ تھی، تحقیقات میں صرف حکومت پیش ہوئی۔ انہوں نے کہا ہم اپنےاصولی موقف پرقائم تھے کہ شہباز شریف استعفیٰ دیں، 17 جون کے واقعے کا مقدمہ اس وقت کے آرمی چیف کی مداخلت پر 28 اگست کو درج ہوا۔ سربراہ عوامی تحریک کا کہنا تھا رپورٹ میں حکومت پنجاب کو قتل عام کا ذمہ دار قرار دیا گیا۔پریس کانفرنس کرتے ہوئے ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا عدالتیں جو درخواستیں مسترد کرتی تھی ہم اس کیخلاف اپیل کرتے تھے، پر امن طور پر قانونی جنگ کو جاری رکھا۔ انہوں نے کہا لاہورہائیکورٹ نےمظلوموں کی داد رسی کی ہے، درخواست گزاروں کو فوری رپورٹ کی کاپی دینےکا حکم دیا گیا ہے۔