مقبول خبریں
راچڈیل مساجد کونسل کی طرف سے مئیر کونسلر محمد زمان کی مئیر چیرٹیز کیلئے فنڈ ریزنگ ڈنر کا اہتمام
اوورسیز پاکستانیوں کے لئے خصوصی سیل بنایا جانا چاہئے: سلیم مانڈوی والا
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
برطانیہ میں آباد تارکین وطن کی مسئلہ کشمیر پر کاوشیں قابل تحسین ہیں:چوہدری محمد سرور
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
کشمیریوں کو ان کا حق دیئے بغیر خطے میں پائیدار امن کا حصول ممکن نہیں: راجہ نجابت حسین
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
برطانیہ میں مقیم کشمیری و پاکستانی 16مارچ کو بھارت کے خلاف مظاہرہ کریں گے: راجہ نجابت حسین
وہ بے خبر تھا سمندر کی بے نیازی سے!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
پاکستان،چین اقتصادی راہداری میں آزاد کشمیر کو بنیادی حیثیت حاصل ہے:سردار عتیق
اولڈہم:آل جموں و کشمیر مسلم کانفرنس کے صدر سابق وزیر اعظم آزاد کشمیر سردار عتیق احمد خاں جو کہ گزشتہ دس روز سے برطانیہ کے دورہ پر آئے ہوئے تھے،پاکستان روانگی سے قبل یوکے اسلامک مشن اولڈہم میں ایک پریس کانفرنس کے موقع پر بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ انکے دورے کا بنیادی مقصد مسئلہ کشمیر کو دوبارہ اجاگر کرنے،مقبوضہ کشمیر میں بھارتی جارحیت اور انسانیت سوز مظالم کی حقیقت کے علاوہ آزاد کشمیر کے سرحدی علاقوں میں آئے روز بمباری کر کے نہتے کشمیریوں کو نشانہ بنا کر شہید کرنے کے واقعات بارے برطانیہ کے ایوانوں تک باور کروانا تھا،انہوں نے مزید کہا کہ دورہ کامیاب کروانے میں ممبران برطانوی پارلیمنٹ،کل جماعتی رابطہ کونسل،مسلم کانفرنس کے قائدین و کارکنان نے اہم کردار ادا کیا اور پہلی مرتبہ برمنگھم کے مقام پر مرکزی اجتماع میں عوام کا جم غفیر دیکھنے میں آیا،انہوں نے کہا کہ پاکستان،چین اقتصادی راہداری میں آزاد کشمیر کے خطہ کو بنیادی حیثیت حاصل ہے کیونکہ چین کے بعد آزاد کشمیر سے گزر کر یہ منصوبہ پاکستان میں داخل ہوتا ہے،انہوؒں نے کہا کہ بد قسمتی سے پچھلے نو سالوں سے جمہوریت کا آلاپ راگنے والوں نے بیرونی دنیا میں مسئلہ کشمیر کا حقیقی رخ نہیں دکھایا اس کے بر عکس بھارتی لابی انتہائی سر گرم ہے اور منفی پراپیگنڈہ کر کے دنیا تک اصل تصویر و حقائق نہیں پہنچنے دیتے،پچھلے نو سالوں سے حریت کانفرنس کی قیادت کو پاکستان آنے کی دعوت تک نہیں دی گئی آخری مرتبہ سابق صدر پرویز مشرف نے ایسا کیا تھا،آزاد کشمیر کے اندر غیر ریاستی جماعتوں کے وجود کو تسلیم نہیں کرتا اس سے بھی مسئلہ کشمیر اجاگر کرنے میں دشواری ہے،پاکستان کے موجودہ سیاسی صورتحال پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا اس وقت فی الفور عبوری نظام یا پھر قومی حکومت کی ضرورت ہے جو کہ چند سال تک قائم رہے اصلاحات کے عمل کو غیر جانبدارانہ مکمل کرے جس سے صاف و شفاف،آزادانہ،غیر جانبدارانہ انتخاب کا راستہ ہموار ہو سکے،تنہا جمہوریت مسائل کا حل نہیں،جمہوریت ریاست سے ہے نہ کہ ریاست جمہوریت ہے یہ بات سمجھنے کی ضرورت ہے،سابق صدر پرویز مشرف اس وقت پاکستان کی وہ واحد شخصیت ہیں جو بیرونی طاقتوں کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر بات کر سکتے ہیں،ختم نبوت بارے انہوں نے کہا کہ موجودہ بحران کی ذمہ دار حکومت وقت ہے جنہوں نے جان بوجھ کر اس مسئلہ کو پیدا کیا بنیادی وجہ پاکستان کی عدالت عظمیٰ اور احتساب عدالتوں نے جس طرح پہلی مرتبہ طاقتور کو قانون کے کٹہرے میں لا کھڑا کیا ہے مسلم لیگ ن کی قیادت و حکومت اس مسئلہ سے عوام اور عالمی سطح پر توجہ ہٹانا چاہتی تھی اس لئے ایسا گھنائونا کھیل کھیلا گیا،انہوں نے کہا کہ ختم نبوت پر تمام امت مسلمہ کا ایمان کامل ہے نبی کریمؐکی تعلیمات کو جتنا زیادہ پھیلایا جائے گا تو دنیا میں اتنا ہی امن ہو گا،انہوں نے کہا کہ تجویز دی تھی کہ حضرت محمدؐ کے خطبہ جمعۃالوداع کو اقوام متحدہ کے چارٹر کا حصہ بنانے کا مطالبہ کیا تھا کیونکہ امن و محبت کا پیغام غیر مذاہب تک پہنچے،انہوں نے کہا کہ ایسے لگ رہا ہے کہ مسئلہ کشمیر کا حل قریب ہے نریندر مودی ایسا کر سکتے ہیں کیونکہ اسی میں انکے سیاسی مستقبل کی بقا ہے،کانگریس سے مسئلہ کشمیر کے حل بارے توقع رکھنا فضول ہے،چین پاکستان راہداری منصوبہ کشمیری قوم کے دیرینہ مطالبے حق خود ارادیت میں سنگ میل ثابت ہو سکتا ہے،انہوں نے حالیہ دورہ برطانیہ کو انتہائی مفید معلوماتی قرار دیا،اس پریس کانفرنس کے موقع پر مسلم کانفرنس برطانیہ کے صدر چوہدری بشیر رٹوی،ریاض بڑالوی،عثمان عتیق،لالہ علی اصغر و دیگر جماعتی رہنما بھی موجود تھے۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر