مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
بدعنوانی کیخلاف کارروائی حصول تخت کی کوشش نہیں: سعودی ولی عہد محمد بن سلمان
ریاض: سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کا کہنا ہے بدعنوانی کیخلاف کارروائی حصول تخت کی کوشش نہیں، 95 فیصد ملزمان رقوم کی واپسی پر آمادہ ہیں جبکہ 4 فیصد گرفتار شہزادے عدالت میں جانا چاہتے ہیں۔محمد بن سلمان نے امریکی جریدے کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا 80 کے عشرہ سے سعودی عرب کو کرپشن نے جکڑا ہوا ہے، ایک اندازہ کے مطابق سعودی حکومت کے اخراجات کا 10 فیصد حصہ کرپشن کی نذر ہوجاتا ہے اور اس میں اوپر سے لے کر نیچے تک تمام افراد ملوث ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ سرکاری ادارے دو سال تک تحقیقات کرتے رہے جس کے بعد سے 200 افراد کے نام سامنے آئے جن سے اس وقت پوچھ گچھ ہو رہی ہے۔ محمد بن سلمان کے مطابق اس کارروائی کے نتیجے میں ایک کھرب ڈالر بازیاب ہونے کی امید ہے۔ سعودی عرب داخلی طور پر جو اقدامات کر رہا ہے ان کا مقصد اپنی طاقت اور معیشت میں بہتری لانا ہے۔