مقبول خبریں
جموں کشمیر نیشنل عوامی پارٹی برطانیہ برانچ کے زیرِ اہتمام فکر مقبول بٹ شہید ورکز یونیٹی کنونشن کا انعقاد
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
ہم دھوپ میں بادل کی، درختوں کی طرح ہیں!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
FAMS ادارہ کامیابی کے ساتھ اہداف کی جانب گامزن ہے،: ڈاکٹر عامر ایوب و دیگر مقررین
مانچسٹر:پاکستان میں وسائل کی کمی کے باعث نادار اور غریب افراد کے بچے میڈکل کے شعبہ میں ذہانت کے باوجود تعلیم حاصل کر کے ڈاکٹر نہیں بن سکتے جو کہ بہت بڑا المیہ ہے،اسی سوچ و فکر کو عملی جامہ پہنانے کیلئے غریب و نادار افراد کے بچوں کو میڈیکل تعلیم مفت فراہم کرنے کیلئے ’’ فنانشل اسسٹنٹ فار میڈیکل سٹوڈنٹس ‘‘ جیسے فلاحی ادارے کی بنیاد رکھی تھی اور اب کامیابی کے ساتھ اہداف کی جانب گامزن ہے،ان خیالات کا اظہار ڈاکٹر عامر ایوب،لالہ رخ،محمد اقبال،بشریٰ چوہدری نے مقامی ہال میں رکھی گئی ایک تقریب کے موقع پر کیا،انہوں نے مزید کہا کہ کسی بھی معاشرے کی تعمیر و ترقی میں سب سے اہم عنصر تعلیم ہے اس کے بغیر کچھ بھی ممکن نہیں بحیثیت شعبہ میڈیکل سے وابستہ ہونے کے ناطے ہم نے دیکھا کہ غریبوں کے بچے انتہائی ذہین ہونے کے باجود ڈاکٹر بننے سے محروم رہتے ہیں ہم اپنی بساط کے مطابق کام کر رہے ہیں لیکن اس ضمن میں حکومت پاکستان کو بھی ٹھوس اقدامات ریاستی ادارے کی ضرورت ہے جہاں پر اہلیت قابلیت بنا کسی سفارش کے حقدار بچوں کے شعبہ میڈیکل کی تعلیم مکمل کرنے تک تمام تر اخراجات ادا کئے جائیں اسے ترجیح بنیادوں پر شروع کیا جائے،برطانوی پارلیمنٹ کے رکن و شیڈو وزیر برائے امیگریشن پاکستانی نژاد افضل خان نے کہا کہFAMSلائق تحسین ہے اور جو ڈاکٹر خواتین و حضرات اس کو چلا رہے ہیں مادر وطن کی مٹی سے محبت و الفت اور یگانگت کا منہ بولتا ثبوت ہے اسی طرح کے جتنے بھی فلاحی ادارے حقیقی طور پر نیک نیتی سے کام کر رہے ہیں انکی ہر طرح کی مدد کرنا ہمارا فرض ہے کیونکہ یہ مستقبل کے معماروں کی زندگی سنوارنے اور معاشرے کی بہتری کیلئے عملی طور پر کام کر رہے ہیں،اس تقریب میں خواتین،مرد و حضرات اور بچوں کی بڑی تعداد میں بچوں نے بھرپور شرکت کر کے مدد کا عملی ثبوت دیا۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر