مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مقبوضہ کشمیر:بھارتی فوج کا کریک ڈائون،گھر گھر تلاشی،جھڑپیں،نظام زندگی مفلوج
سرینگر:مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج نے ایک بارپھربڑے پیمانے پرکریک ڈاؤن شروع کردیا،مختلف علاقوں کامحاصرہ کرکے گھرگھرتلاشی جبکہ بچوں اورخواتین پرتشددسمیت لوٹ ماربھی کی جانے لگی،صورتحال کیخلاف ہزاروں افرادنے سڑکوں پرآکراحتجاجی مظاہرے کئے ،تاہم قابض فورسزنے وحشیانہ تشددکرتے ہوئے درجنوں مظاہرین زخمی اورمتعددگرفتارکرلئے ،سخت ترین کشیدگی کے باعث مقبوضہ وادی بھرمیں نظام زندگی مفلوج رہا،بازاراورکاروباری مراکزبندتھے جبکہ انٹرنیٹ،موبائل فون اورریل سروس بھی بدستورمعطل رہی ۔اطلاعات کے مطابق ضلع کپواڑہ میں بھارتی فورسز کنن ،پوشہ پورہ اور ترہگام سمیت متعدد علاقوں کو محاصرے میں لیکرچادر اور چار دیواری کا تقدس پامال کرتے ہوئے گھروں میں گھس گئیں،غاصب اہلکاروں نے لوگوں کو رات کے اندھیرے اور سخت سردی میں کئی گھنٹے گھروں سے باہرکھڑاہونے پر مجبورکر دیاجبکہ تلاشی کے دوران خواتین اوربچوں کوبھی مارپیٹ کانشانہ بنایاگیا،مقامی لوگوں کاکہناتھاکہ بھارتی فوجی نے گھریلو سامان کی توڑ پھوڑ کی جبکہ زیورات و نقدی بھی ساتھ لے گئے ،اسی دوران لوگوں نے شدید احتجاج اور پتھراؤ کیاجبکہ فورسزکی فائرنگ سے متعددافرادزخمی ہوگئے ۔دریں اثنابھارتی فورسز نے خانصاحب بڈگام کے راولپورہ نامی گاؤں کو محاصرے میں لے لیا،تمام راستے مکمل سیل کردئیے گئے اورکسی کوآنے جانے کی اجازت نہ ملی،مقامی لوگوں نے احتجاج کیاتوفورسزنے آنسوگیس کی شیلنگ اورلاٹھی چارج کیاجس سے 4افرادزخمی ہوگئے ۔ادھر پلوامہ اور شوپیان کے 3دیہات میں وسیع پیمانے پر آپریشن کی کوشش کی گئی،جس دوران مظاہرین اورقابض فورسز میں شدیدجھڑپیں ہوئیں، جن میں4 افراد زخمی ہوئے جبکہ3گرفتارکرلئے گئے ۔مزیدبرآں مقبوضہ ریاست بھرمیں کشیدہ صورتحال کے باعث دکانیں،بازاراورکاروباری وتجارتی مراکزبندرہے ،مختلف علاقوں میں سڑکیں سنسان دکھائی دیں جبکہ کٹھ پتلی انتظامیہ کی طرف سے انٹرنیٹ،موبائل فون اورریل سروس بدستوربندرکھی گئی۔