مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مقبوضہ کشمیر :ریاستی دہشت گردی جاری،مزید2 نوجوانوں کو شہید کر دیا گیا
سری نگر :مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز کی ریاستی دہشتگردی جاری، مزید 2کشمیری نوجوانوں کو شہید کردیا گیا۔ کارروائی کے خلاف گلی گلی احتجاجی مظاہرے شروع ہوگئے ۔بھارتی پولیس اور فوج کا مظاہرین کو منتشر کرنے کے لئے طاقت کا وحشیانہ استعمال، کئی افراد زخمی ہو گئے ۔گزشتہ روز حاجن کے میر محلہ میں گھر گھر تلاشی اور محاصرے کے دوران مزید دو کشمیری نوجوانوں کو شہید کردیاگیا ۔اس سے پہلے اسی علاقے میں ایک حملے میں بھارتی پولیس کا ایک اہلکار ہلاک اوردو زخمی ہوگئے تھے ۔سید علی گیلانی ، میرواعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک نے ہڑتال پر 5سال کی قید کے قانون کو مسترد کرتے ہوئے کہاکہ احتجاج کا حق پوری دنیا کی جمہوریتیں دیتی ہیں ۔ریاستی حکمران اس آرڈیننس کے ذریعے آمریت کوفروغ دے رہے ہیں ۔ادھر متحدہ جہاد کونسل کے سربراہ سیدصلاح الدین کے اہل خانہ نے تفتیشی ایجنسی این آئی اے کی مہم کوانتقامی قراردیتے ہوئے خبردارکیاکہ اگر شاہدیوسف کورہا نہ کیاگیااورمزمل کی طلبی نوٹس واپس نہ لئے گئے تو تمام عزیزواقارب اجتماعی گرفتاری پیش کریں گے ۔مقبوضہ کشمیر میں عدالت عالیہ نے غیرقانونی طورپر نظربند 20افرادپر کالے قانون پبلک سیفٹی ایکٹ کے نفاذ کوکالعدم قراردے کر ان کی فوری رہائی کا حکم جاری کردیاہے ۔کٹھ پتلی وزیراعلٰی محبوبہ مفتی نے وفاق کے دائرے میں مسئلہ کشمیرکے حل کوممکن قراردیتے ہوئے کہا کہ مذاکراتی اورمفاہمتی عمل کے بغیرآگے بڑھنے کاکوئی دوسراراستہ نہیں ۔دریں اثنا بھارت کے سابق وزیر داخلہ کانگریس کے سنیئر رہنما پی چدمبرم نے کہا ہے کہ دینشور شرما کی بطور مذاکرات کار کی نامزدگی کشمیریوں کو تقسیم کرنے کا حربہ ہے ۔