مقبول خبریں
مکس مارشل آرٹ کونسل اور چیریٹی آرگنائزیشن کے زیر اہتمام تقریب کا انعقاد
بریگزیٹ بحران :کنزرویٹو پارٹی کی تین خواتین ممبر کی آزاد گروپ میں شمولیت
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
میئرآف لوٹن (برطانیہ) نے شاہد حسین سید کو کمیونٹی سروسز پر شیلڈ پیش کی
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
راجہ نجا بت حسین کی صدر آزاد کشمیر سردار مسعود اور وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر سے ملاقات
میں روشنی سے اندھیرے میں بات کرتا ہوں!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
خواتین کو ہراساں کرنے کیخلاف بالی ووڈ اداکارہ ریچا چڈا بھی میدان میں آ گئیں
ممبئی:خواتین کو ہراساں کرنے کیخلاف اب بالی ووڈاداکارہ ریچا چڈا بھی میدان میں آگئیں ۔ریچا چڈا کی جانب سے لکھے گئے بلاگ میں انہوں نے ’’می ٹو‘‘ ٹرینڈ کا ذکر کرتے ہوئے بتایا کہ گزشتہ 2 ہفتے سے ان سے بار بار پوچھا جا رہا ہے کہ وہ ’’می ٹو‘‘ کے بارے میں کیا سوچتی ہیں جس پر انہوں نے لکھا کہ بھارت میں تو خواتین کے خلاف زبانی، بصری اور جنس کی بنیاد پر ہراساں کرنا معمول کی روایت ہے ۔اس ملک میں ’’ریپ‘‘ کو کسی کی ’’عزت لوٹنا‘‘ کہا جاتا ہے جسے جرم سمجھا ہی نہیں جاتا ۔اداکارہ ریچا چڈانے لکھا بھارت میں خواتین کا مالک اہل خانہ اور مردوں کو سمجھا جاتا ہے ، شادی کے بعد کسی بھی خاتون کی نوکری کرنے سمیت دیگر فیصلے اسکا شوہر اور سسرال والے کرتے ہیں ۔بالی ووڈاداکارہ کے مطابق بھارت میں ہر 22 منٹ کے اندر ایک خاتون کا ’’ریپ‘‘ ہوتا ہے جبکہ یہاں خواتین زندہ رہنے کیلئے جنسی طور پر ہراساں ہونے کی صورت میں ٹیکس ادا کر رہی ہیں ۔