مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
روہنگیا مسلمانوں کی مالی امداد کیلئے پاکستانی کمیونٹی سنٹر لانگ سائیڈ مانچسٹر میں تقریب کا انعقاد
مانچسٹر:برما میں روہنگیا مسلمانوں پر ڈھائے جانے والے وحشیانہ مظالم میں دوبارہ شدت آ گئی ہے،عورتوں،بچوں کو بھی اسکا نشانہ بنایا جا رہا ہے آئے روز عورتوں کی عصمت دری کے دلخراش واقعات رونما ہو رہے ہیں،انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں،اقوام متحدہ اور عالمی طاقتوں اور امت مسلمہ کیلئے باعث تشویش اور لمحہ فکریہ ہے،مذہب کے نام پر مسلمانوں کی سر عام نسل کشی اور بین الاقوامی سطح پر واضع خاطر خواہ ٹھوس اقدامات اٹھا کر برما کی حکومت،فوج اور بدھ مت ملیشیا پر سفارتی دبائو نہ ڈالنا دوہرے معیار کو عیاں کرتی ہے،ان دکھ بھرے خیالات و جذبات کا اظہار راحیلہ احمد،رانا سمیع،بلال احمد،افتخار احمد،افضال خان،محسن غفور نے پاکستانی کمیونٹی سنٹر لانگ سائیڈ مانچسٹر میں روہنگیا کے مسلمانوں کی مالی امداد کیلئے رکھی گئی ایک تقریب کے دوران کیا،انہوں نے مزید کہا کہ بحیثیت انسان و مسلمان ہماری اولین اخلاقی ذمہ داری ہے کہ اپنے مظلوم بھائیوں،بہنوں،بچوں اور بزرگوں کی ہر طرح سے ممکن مدد کریں جنکا برما میں جینا اجیرن بن گیا تھا اور انہیں مجبوری کے عالم میں ہجرت کر کے بنگلہ دیش میں پناہ لینی پڑی اور اب مہاجرین کیمپ میں کسمپرسی کی زندگی گزار رہے ہیں الیکٹرانک میڈیا کے ذریعے انکی حالت زار دیکھی نہیں جا سکتی،انہوں نے کہا کہ مہذب معاشرے میں رہتے ہوئے ہماری اخلاقی ذمہ داری ہے کہ اپنے حلقہ کے ممبران پارلیمنٹ و کونسلر حضرات سے رابطہ کر کے انہیں اس بات پر قائل کریں کہ وہ برما میں مسلمانوں پر ہونے والے مظالم بارے عملی اقدامات اٹھائیں،انہوں نے کہا کہ ہمیں دل کھول کر عطیات دینے چاہئے،اس موقع پر مہندی،ملبوسات کے سٹال اورچند قیمتی اشیا کی نیلامی بھی کی گئی اور جمع شدہ رقم مسلم ایڈز کے حوالے کر کے برما تک پہنچائی جائے گی،بڑی تعداد میں مقامی کمیونٹی کے افراد نے شرکت کر کے روہنگیا مسلمانوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کی اور دل کھول کر عطیات دیئے۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر