مقبول خبریں
دی سنٹر آف ویلبینگ ، ٹریننگ اینڈ کلچر کے زیر اہتمام دماغی امراض سے آگاہی بارے ورکشاپ
پارٹی رہنما شعیب صدیقی کو پاکستان تحریک انصاف پنجاب کا سیکریٹری جنرل بننے پر مبارک باد
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت جولائی میں برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز،سیمینارز منعقد کریگی
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
اوورسیز پاکستانیز ویلفیئر کونسل کا وسیم اختر چوہدری اور ملک ندیم عباس کے اعزاز میں استقبالیہ
مسئلہ کشمیر کو برطانیہ و یورپ میں اجاگر کرنے پر تحریکی عہدیداروں کا اہم کردار ہے: امجد بشیر
جس لڑکی نے خواب دکھائے وہ لڑکی نابینا تھی!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
پیرس: کامیڈین کی لائیو شو کے دوران گلوکارہ کے لباس سے چھیڑچھاڑ
پیرس:لورینٹ بفی ایک گلوکارہ کے ہمراہ ایک فرانسیسی ٹی وی چینل کے لائیو شو میں شریک تھے۔ گلوکارہ کے انٹرویو کے دوران بفی بار بار اس کے لباس کے ساتھ چھیڑخانی کرتے رہے۔ شاید وہ ایسا شو کی ریٹنگ بڑھانے کی غرض سے کر رہے تھے اور ان کا مقصد زیادہ سے زیادہ ناظرین کو اپنی جانب متوجہ کرنا تھا۔ اس دوران انہوں نے اپنے مخصوص مزاحیہ انداز میں کچھ نازیبا الفاظ بھی کہے۔ خاتون مسلسل ہنستے ہنستے انہیں ایسا کرنے سے منع کرتی رہیں۔ ابتداء میں تو شو کے میزبان نے بھی معاملے کو محض ایک مزاحیہ اداکار کی مزاحیہ حرکت سمجھ کر اسے نظرانداز کیا لیکن جب بفی باز نہ آئے تو میزبان نے انہیں روکنے کی کوشش کی لیکن انہوں نے گلوکارہ نولوین لیروئے کو تنگ کرنا جاری رکھا۔ اس پر میزبان بولے، ایسا مت کرو بفی، وہ ایک ماں بھی ہیں ۔ بفی بولے، ہاں! نوجوان اور خوبصورت ماں ۔ اس پر خاتون نے معذرت خواہانہ انداز میں وضاحت کرتے ہوئے کہا، میں واضح کرنا چاہتی ہوں کہ میں نے انہیں صرف اس لئے برداشت کیا کیونکہ یہ میرے دوست ہیں۔واقعے کے بعد فرانسیسی ٹی وی کی انتظامیہ کو ناظرین کی جانب سے بہت سی شکایات موصول ہوئیں اور اسے کہنا پڑا کہ اس نے یہ جاننے کیلئے واقعے کی تحقیقات شروع کر دی ہیں کہ کیا واقعہ چینل کے اصولوں کی خلاف ورزی ہے یا نہیں۔واقعے کے ایک ہفتہ بعد مزاحیہ اداکار کو ایک اور ٹی وی پروگرام کے دوران عوام سے معافی مانگنا پڑی۔ اس کا کہنا تھا کہ میں معافی مانگنا چاہوں گا کیونکہ میں سمجھتا ہوں کہ میں نے ایک غلط حرکت کی، میں نے ایک لڑکی کے لباس کو چھیڑا اور میں جانتا ہوں کہ یہ اچھی بات نہیں ہے۔واضح رہے کہ حجاب پر پابندی لگانے والے فرانس کی ٹیلی ویژن چینلز کو ریگولیٹ کرنے والی اتھارٹی کو گزشتہ 12 ماہ کے دوران ایسے کم از کم 5 واقعات کے متعلق شکایات موصول ہو چکی ہیں۔