مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
دورہ رخائن: میانمار حکومت نے اقوام متحدہ کے مشن کو بھی روک دیا
نیویارک/ لندن: روہنگیا مسلمانوں پر مظالم کے باوجود میانمار حکومت کی ڈھٹائی برقرار، امن کی نوبل انعام یافتہ آنگ سان سوچی کی حکومت نے اقوام متحدہ کی اپیل بھی مسترد کر دی۔ روہنگیا مسلمانوں کی نقل مکانی کا جائزہ لینے کے لیے اقوام متحدہ کے مشن کو ملک میں آنے سے روک دیا۔ برطانیہ نے بھی میانمار حکومت پر کڑی تنقید کی۔ برطانوی وزیر مارک فیلڈ کا کہنا ہے کہ رخائن میں گزشتہ چند ہفتوں کے دوران مظالم ناقابل قبول سانحہ ہے۔ آنگ سان سوچی کی حکومت تشدد ختم اور امداد کے راستے میں رکاوٹیں دور کرے۔ترکی کے ڈپٹی وزیرِ اعظم نے بنگلا دیش کے ساحلی شہر کوکس بازار کا دورہ کیا جہاں انہوں نے روہنگیا مسلمانوں کے لیے ایک لاکھ خیمے فراہم کرنے کا اعلان کیا ہے۔ مارک فیلڈ کا کہنا تھا کہ میانمار حکومت تشدد ختم کرے تا کہ لوگ گھروں کو لوٹ سکیں۔ رخائن میں جو ہوا ناقابل قبول سانحہ ہے۔ ایک ماہ کے دوران پانچ لاکھ روہنگیا مسلمان بنگلا دیش ہجرت کر چکے ہیں۔ادھر عالمی فلاحی ادارے آکسفام نے خبردار کیا ہے کہ بنگلا دیش پہنچنے والے روہنگیا پناہ گزینوں میں سے 70 فیصد کے پاس مناسب پناہ اور 50 فیصد کے پاس پینے کا صاف پانی بھی نہیں ہے۔