مقبول خبریں
الیکشن 2019 کیلئے کنگزوے وارڈ راچڈیل سے لیبر پارٹی کی مس ایلس رائٹ نامزد
بھارتی لابی نے کشمیر کانفرنس کوانے کے لئے اوچھے ہتھکنڈے استعمال کیے: شاہ محمود قریشی
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
میئرآف لوٹن (برطانیہ) نے شاہد حسین سید کو کمیونٹی سروسز پر شیلڈ پیش کی
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
راجہ نجا بت حسین کی صدر آزاد کشمیر سردار مسعود اور وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر سے ملاقات
میں روشنی سے اندھیرے میں بات کرتا ہوں!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مسئلہ کشمیر کا کوئی حل کشمیریوں کی مرضی کے بغیرقابل قبول نہیں ہے: نواز شریف
لندن ... وزیر اعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف نے اپنے دورہ برطانیہ میں وزرا اور عالمی شخصیات سے ملاقاتوں میں اس عزم کا بھرپور اعادہ کیا ہے کہ کشمیریوں کی مرضی کے بغیر مسئلہ کشمیر کا کوئی حل پاکستان کیلئے قابل قبول نہیں ہے۔ برطانیہ کے وزیر خارجہ، وزیر داخلہ اور بین الاقوامی ترقی کی وزیر جسٹن گریننگ سے ملاقات میں وزیر اعظم پاکستان نے پاکستان اوربھارت کے درمیان دیرینہ تنازعات کے حل کیلئےبرطانوی حکومت کی مسلسل حمایت کی تعریف کی اور کہا کہ پاکستان اوربھارت کے درمیان 6 عشرے سے جاری عدم اعتماد کے ماحول کی وجہ سے سماجی شعبے کے بجائے دفاعی اخراجات میں اضافہ ہوا ہے اب مقابلے بازی کی یہ پالیسی ختم ہونی چاہئے تاکہ دونوں ملکوں کے عوام کی حالت بہتر بنائی جاسکے ،نواز شریف نے کہا کہ پاکستان بھارت کے ساتھ تمام دیرینہ تنازعات مذاکرات کے ذریعے طے کرنے کاخواہاں ہے، انھوں نے کہا کہ کشمیر کا مسئلہ کشمیری عوام کی شمولیت کے بغیر حل نہیں کیاجاسکتا مسئلہ کشمیر حل کرنے کیلئے پاکستان اور بھارت کے ساتھ کشمیری عوام کی شرکت اور اتفاق رائے ضروری ہے۔ انھوں نے کہا کہ پاکستان افغانستان میں امن کاخواہاں ہے ، اور اس سلسلے میں ہر ممکن مدد اور تعاون کیلئے تیار ہے۔ برطانوی وزیر برائے بین الاقوامی ترقی جسٹن گریننگ سے ملاقات میں وزیراعظم نواز شریف نے کہا کہ پاکستان کی نئی جمہوری حکومت ملک میں تعلیم کے فروغ اور معاشی بحالی کیلئے کوشاں ہے، معیشت کی بہتری کیلئے کوئی فوری حل موجود نہیں لیکن اس کے لئے متبادل کوششیں کی جارہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت تعلیم کے شعبے کی ترقی پر خصوصی توجہ دے رہی ہے اور اس کے لئے اضافی وسائل بروئے کار لائے جارہے ہیں، اگلے پانچ سال میں تعلیمی بجٹ ملک کی پیداوار کے 4 فیصد تک لے جائینگے۔برطانوی وزیر نے تعلیم کے شعبے میں اضافی اخراجات کے حکومتی عزم کو سراہا اور بچوں کی تعلیم کیلئے ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی۔ برطانیہ کی وزیر داخلہ تھریسامے نے بھی وزیراعظم سے ملاقات کی اور سیکورٹی اوردہشت گردی کے خلاف جنگ میں تعاون کے حوالے سے تبادلہ خیال کیا ، وزیراعظم نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں برطانیہ کے تعاون اور مدد کی تعریف کرتے ہوئے وزیرداخلہ تھریسا مے کو پاکستان کادوست قرار دیا۔ اس موقع پر بات چیت کرتے ہوئے وزیراعظم نواز شریف نے کہاکہ پاکستان دہشت گردی کے ناسور کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کیلئے پرعزم ہے اور اس مقصد کیلئے تحفظ پاکستان آرڈیننس نافذ کیا گیا ہے،انھوں نے وزیر داخلہ کو تحفظ پاکستان آرڈی ننس اور دہشت گردی کے خاتمے کیلئے حکومت پاکستان کی جانب سے کئے جانے والے اقدامات سے آگاہ کیا۔