مقبول خبریں
مئیر کونسلر جاوید اقبال نےرضاکارانہ خدمات پرتنظیم وائی فائی کو تعریفی سرٹیفکیٹ اور شیلڈ سے نوازا
پیپلزپارٹی کے رہنما ندیم اصغر کائرہ کی پریس کانفرنس ،صحافیوں کے سوالات کے جوابات دیئے
واجد خان ایم ای پی کا آزاد کشمیر سے آئے حریت کانفرنس کے رہنمائوں کے اعزاز میں عشائیہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے زیر اہتمام پہلی کشمیر کلچرل نمائش کا اہتمام
دسمبر بے رحم اتنا نہیں تھا!!!!!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مس ترکی کی متنازع ٹویٹ سامنے آنے کے بعد اسے ٹائٹل سے محروم کر دیا گیا
انقرہ : غیر ملکی میڈیا کے مطابق عطر اسان نامی یہ 18 سالہ دوشیزہ کو گزشتہ دنوں ہی مس ترکی 2017ء کا خطاب دیا گیا تھا۔ تاہم جب مقابلے کا اہتمام کرانے والی کمیٹی کو علم معلوم ہوا کہ مس ترکی نے اپنی ایک سابقہ ٹویٹ میں صدر طیب اردوان کا تختہ الٹنے کی سازش کی حمایت کی تھی۔ مقابلہ حسن منعقد کرانے والی کمیٹی کے ڈائریکٹر جان صاندقجی اوگلو کا کہنا ہے کہ ہم دنیا بھر میں ترکی کی ساکھ کو مزید مضبوط بنانا چاہتے ہیں، ایسے پیغامات جن سے ترکی کی عالمی سطح پر شہرت کو نقصان پہنچے کسی صورت میں قابل قبول نہیں ہیں۔ترک حکام نے عطر اسان کی ٹویٹ کو ناکام انقلاب کے دوران جاں بحق ہونے والے شہریوں کے خون سے غداری اور ان کی قربانیوں کی توہین قرار دیا ہے۔ عطر سان کو چین میں ہونے والے ایک مقابلہ حسن میں ترکی کی نمائندگی کرنا تھی، مگر متنازع ٹویٹ نے نہ صرف اس کا مقامی سطح پر ملکہ حسن کا لقب چھین لیا بلکہ عالمی ملکہ حسن کے مقابلے میں حصہ لینے سے بھی محروم کر دیا۔