مقبول خبریں
پاکستانی کمیونٹی سنٹر اولڈہم میں کپتان محمد منیر میموریل والی بال ٹورنامنٹ کا انعقاد،مانچسٹر کی جیت
پارٹی رہنما شعیب صدیقی کو پاکستان تحریک انصاف پنجاب کا سیکریٹری جنرل بننے پر مبارک باد
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت جولائی میں برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز،سیمینارز منعقد کریگی
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
اوورسیز پاکستانیز ویلفیئر کونسل کا وسیم اختر چوہدری اور ملک ندیم عباس کے اعزاز میں استقبالیہ
مسئلہ کشمیر کو برطانیہ و یورپ میں اجاگر کرنے پر تحریکی عہدیداروں کا اہم کردار ہے: امجد بشیر
جس لڑکی نے خواب دکھائے وہ لڑکی نابینا تھی!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
طالبان کیساتھ خلوص دل سے مذاکرات کا آغاز کیا، نوازشریف کی نک کلیگ سے ملاقات میں تصدیق
لندن ... وزیراعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ ہم نے نیک نیتی اور خلوص دل سے طالبان کے ساتھ مذاکرات کا آغاز کردیا ہے اور نیک مقصد کی کامیابی کیلئے رب العزت سے دعاگو بھی ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے برطانوی ڈپٹی وزیر اعظم نک کلیگ سے ملاقات میں کیا۔ اس موقع پر وزیر اعلی پنجاب میاں محمد شہباز شریف، وفاقی وزیر خواجہ آصف اور اعلی بیوروکریٹ بھی ان کے ہمراہ تھے۔ پاکستانی وفد نے ملاقات میں طالبان سے مذاکرات شروع کرنے کی تصدیق کرتے ہوئے یہ بھی کہا کہ انسداد دہشت گردی فورسز اور خفیہ ہتھیاروں کی استعداد بڑھائی جا رہی ہے تاکہ ملک سے دہشت گردی اور انتہا پسندی کا خاتمہ ممکن ہو سکے۔ نواز شریف نے کہا حکومت ملک کے انسداد دہشت گردی کے اداروں اور سکیورٹی فورسز کی صلاحیت اور استعداد بھی بڑھانے پر کام کر رہی ہے تاکہ ملک سے دہشت گردی اور انتہا پسندی کا خاتمہ کیا جا سکے۔ حکومت یہ نہیں چاہتی کہ ملک کی گلیوں میں معصوم شہریوں اور سکیورٹی فورسز کے اہلکار گلیوں میں مارے جائیں۔ وزیراعظم پاکستان نے حال ہی میں جاری کیے جانے والے تحفظِ پاکستان آرڈیننس کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اس آرڈیننس کو تیار کرنے کا مقصد خاص طور پر عوام اور ملک دشمن سرگرمیوں میں ملوث دہشت گردوں سے نمٹنا ہے۔ وزیراعظم نے برطانیہ کے دورے پر جانے سے پہلے وزیر داخلہ چوہدی نثار علی خان کو طالبان کے ساتھ مذاکرات کرنے کا اختیار دیا تھا۔