مقبول خبریں
یورپین مسلم کونسل کے صدر میاں عبد الحق اور یو کے اسلامک مشن محمد صادق کھوکھر کا ناروے پہنچنے پر والہانہ استقبال
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
ہم دھوپ میں بادل کی، درختوں کی طرح ہیں!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
خوشحالی شریفوں اور زرداریوں کیلئے نہیں غریبوں کیلئے ہونی چاہئے: عمران خان
جہلم:تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے دینہ میں فواد چودھری کے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے تحریک انصاف کی ٹیم بنانے کا اعلان کر دیا، کہتے ہیں تحریک انصاف کے کھلاڑی ملک کیلئے کھیلیں گے، خوشحالی شریفوں اور زرداریوں کیلئے نہیں ہونی چاہئے، امیر اور غریب کا فرق بڑھ جائے تو معاشرہ پیچھے رہ جاتا ہے، چین نے سب سے پہلے امیر اور غریب میں فرق کم کیا لیکن پاکستان میں امیروں سے ٹیکس اکٹھا کرنے کی بجائے عوام پر ٹیکس لگایا جاتا ہے۔ عمران خان نے مزید کہا کہ پاکستان میں بجلی اور گیس برصغیر میں سب سے مہنگی ہے، ذوالفقار علی بھٹو بے نظیر لیڈر تھے، زرداری اور بلاول نے کیا کیا؟ وراثت کا کاغذ دکھا کر زرداری لیڈر بن گئے، لیڈر ایسے نہیں بنتا، جد و جہد کے بعد بنتا ہے۔ عمران خان نے استفسار کیا کہ مریم نواز اور چودھری نثار کا کیا مقابلہ؟ چودھری نثار نے بہت محنت کی، بلاول اور اعتزاز احسن کا کیا مقابلہ؟انہوں نے مزید کہا کہ نواز شریف اپنی وجہ سے لیڈر بنتے تو آج نہ پوچھتے کیوں نکالا؟ انہوں نے الزام لگایا کہ نواز شریف ترکی کا آخری سلطان ہے، کہتا ہے پاکستان سے جو کرنا ہے، کرو مگر میرا پیسہ رہنے دو۔ عمران خان نے یہ بھی کہا کہ یہ ملک کا خون چوس رہے ہیں، ان کو شکست دے کر نیا پاکستان بنائیں گے، لاہور ہائی کورٹ کے سانحہ ماڈل ٹاؤن کی رپورٹ سامنے لانے کے فیصلے پر اللہ کا شکرگزار ہوں۔جہلم میں فواد چودھری کے جلسے سے خطاب کرنے کے بعد عمران خان دینہ پہنچے جہاں انہوں نے ثقلین چودھری کے جلسے سے خطاب کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان نے فلاحی ریاست بننا تھا جسے زرداری اور شریفوں نے ہائی جیک کر لیا، ملک پر چھوٹا سا طبقہ قابض ہے، ہم نے ملک کو اسلامی فلاحی ریاست بنانا تھا لیکن یہ وہ پاکستان نہیں جس کے لئے جد و جہد کی تھی، یہ ریاست مدینہ کی ریاست جیسی بننا تھی۔عمران خان نے مزید کہا کہ ظلم والا نظام ٹیلنٹ کو موقع نہیں دیتا، یہاں سب کچھ چھوٹے سے طبقے کے لئے ہے، ملک میں انصاف اور میرٹ کو لائیں گے، خیبر پختونخوا میں پہلی دفعہ ڈیڑھ لاکھ بچے پرائیویٹ سکولوں سے سرکاری سکولوں میں گئے ہیں، سرکاری سکولوں میں اساتذہ کو پیسے لیکر بھرتی کروایا گیا تھا، آج خیبر پختونخوا کے سکولوں میں 100 فیصد اساتذہ موجود ہوتے ہیں، ہم نے نچلے طبقے کو اوپر آنے کا موقع دینا ہے۔عمران خان کا یہ بھی کہنا تھا کہ جب گھر میں چوری ہو تو گھر کو نقصان ہوتا ہے، اقتدار میں آ کر جب پیسہ لوٹا جائے تو قوم کا پیسہ چوری ہوتا ہے اور جب پیسہ چوری ہو تو ہسپتال اور روزگار کے مواقع دینے کے لئے پیسہ نہیں ہوتا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں بے شمار وسائل موجود ہیں، یمن کے بعد پاکستان میں سب سے زیادہ آبادی نوجوانوں کی ہے، نوجوانوں کو سستے قرض فراہم کئے جائیں تو پاکستان ترقی کر سکتا ہے، پاکستان میں نوجوان آبادی، زرخیز زمین، کوئلے اور تانبے سمیت سب کچھ موجود ہے، جب تک زرداری اور نواز شریف جیسی قیادت ہو گی تب تک کوئی بھی ملک آگے نہیں جا سکتا۔چیئرمین پی ٹی آئی بولے، انگلینڈ والے اگر غلطی سے نواز شریف کو دو سال کے لئے وزیر اعظم بنا دیں تو یہ ان کا بھی دیوالیہ کر دے گا، نواز شریف گوالمنڈی میں پانچ مرلے کے گھر میں رہتا تھا، آج اس کے بچے اربوں پتی ہیں، اسحاق ڈار سکوٹر پر پھرتا تھا، آج اس کے بچے بھی اربوں پتی ہیں، انہوں نے پیسہ لوٹ کر باہر بھیجا۔انہوں نے مزید کہا کہ جس بھی لیڈر کا بیرون ملک پیسہ، جائیداد اور اقامہ ہو، اس کو کبھی ووٹ نہ دینا، خواجہ آصف دبئی سے اقامہ پر تنخواہ لیتا ہے، اسے شرم آنی چاہئے، احسن اقبال سعودی عرب کا اقامہ لیکر بیٹھا ہوا ہے۔عمران خان نے یہ بھی کہا کہ شاہد خاقان وزیر اعظم بنیں، شریف خاندان کے ملازم نہ بنیں، سپریم کورٹ نے نواز شریف کو نااہل قرار دیا اور شاہد خاقان اسے وزیر اعظم مانتا ہے۔