مقبول خبریں
اولڈہم ٹاؤن میں پہلی جنگ عظیم کی صد سالہ تقریب،جم میکمان،مئیر کونسلر جاوید اقبال و دیگر کی شرکت
مشتاق لاشاری سی بی ای کا پورٹریٹ کونسل ہال میں لگا نے کی تقریب، بیگم صنم بھٹو نے نقاب کشائی کی
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
برما : مسلمانوں کے قتل عام پرعالمی طاقتوں کی خاموشی مجرمانہ فعل : چوہدری الطاف شاہد
اولڈہم:برما روہنگیا میں بے گناہ مسلمانوں کا سر عام قتل اور بین الاقوامی طاقتوں،اقوام متحدہ اور انسانی حقوق کی علمبردار تنظیموں کی مجرمانہ خاموشی دوہرے معیار کی عین عکاسی کرتی ہے کسی بھی نا حق کو قتل کرنا بہت بڑا جرم ہے اور اس پر سرد مہری اس سے بڑا مجرمانہ فعل ہے اب منافقانہ پالیسی نہیں چلے گی،عالمی طاقتوں کو بے گناہ لوگوں کا وحشیانہ قتل عام رکوانے کیلئے عملی طور پر اقدامات اٹھانا ہوں گے وگرنہ دنیا بھر میں احساس محرومی کی وجہ سے مفاد پرست عناصر مزید بد امنی پیدا کرنے کیلئے اپنی کارروائیاں تیز کر دیں اور بین المذاہب کے اندر نفرتیں بڑھنے لگیں گی جو خطرناک ثابت ہو سکتا ہے،یہ باتیں روہنگیا میں ہونے والے وحشیانہ سلوک سے دلبرداشتہ پاک سر زمین پارٹی برطانیہ و یورپ کے صدر چوہدری الطاف شاہد سدھو نے میڈیا کو دیئے گئے اپنے ایک بیان میںکیں،انہوں نے مزید کہا کہ روہنگیا میں مسلمانوں کا قتل عام ایک سوچی سمجھی سازش کے تحت نسل کشی کا منظم منصوبہ ہے کیونکہ یہ سب کچھ ریاست کے ذمہ داروں کی ملی بھگت کا نتیجہ ہے،انہوں نے کہا سب سے زیادہ افسوس دہ بات یہ ہے کہ عالم اسلام کے راہنما ذاتی مفادات کی خاطر بکھرے ہوئے ہیں،اگر اتحاد و اتفاق کا مظاہرہ کیا جائے اور یک آواز ہو کر الٹی میٹم دیا جائے تو کوئی وجہ نہیں کہ عالمی سطح پر شنوائی نہ ہو پھر فی الفور یہ سلسلہ رک سکتا ہے،سب سے پہلے تمام اسلامی ممالک کو میانمار سے فی الفور سفارتی تعلقات منقطہ کر دینے چاہئے اور اقوام متحدہ پر دبائو ڈالیں کہ برما کی فوج براہ راست اس گھنائونے فعل میں ملوث ہے،عالمی عدالت میں اس وحشیانہ قتل کے خلاف مقدمہ چلایا جائے اور ملزمان کو قرار واقعی سزا دی جائے اس وقت تک بین الاقوامی سطح پر اقتصادی پابندی لگانی چاہئے۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر