مقبول خبریں
چیئرمین کشمیر کمیٹی سید فخر امام سے راجہ نجابت اورحریت رہنماء عبدالحمیدلون کی ملاقات
کرالے میں اوورسیزپاکستانیوں کی میٹنگ،مختلف طبقہ ہائے فکر کے افراد کی شرکت
دعوت اسلامی برمنگھم کے زیر اہتمام خراب موسم کے باوجودجشن عید میلاد النبیؐ کا جلوس
برطانوی شاہی جوڑے کی پاکستان میں زبردست پذیرائی، وزیر اعظم اور صدر مملکت سے ملاقاتیں
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سردار عتیق کی قیادت میں جدوجہد آزادی پایہ تکمیل تک پہنچائیں گے:رہنما ایم سی
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
مقبوضہ کشمیرمظالم:عالمی طاقتوں، اقوام متحدہ کو کردار ادا کرنا ہو گا : ڈاکٹر سجاد کریم
بلقیس بانو زندہ کیوں؟؟؟؟؟
پکچرگیلری
Advertisement
برما : مسلمانوں کے قتل عام پرعالمی طاقتوں کی خاموشی مجرمانہ فعل : چوہدری الطاف شاہد
اولڈہم:برما روہنگیا میں بے گناہ مسلمانوں کا سر عام قتل اور بین الاقوامی طاقتوں،اقوام متحدہ اور انسانی حقوق کی علمبردار تنظیموں کی مجرمانہ خاموشی دوہرے معیار کی عین عکاسی کرتی ہے کسی بھی نا حق کو قتل کرنا بہت بڑا جرم ہے اور اس پر سرد مہری اس سے بڑا مجرمانہ فعل ہے اب منافقانہ پالیسی نہیں چلے گی،عالمی طاقتوں کو بے گناہ لوگوں کا وحشیانہ قتل عام رکوانے کیلئے عملی طور پر اقدامات اٹھانا ہوں گے وگرنہ دنیا بھر میں احساس محرومی کی وجہ سے مفاد پرست عناصر مزید بد امنی پیدا کرنے کیلئے اپنی کارروائیاں تیز کر دیں اور بین المذاہب کے اندر نفرتیں بڑھنے لگیں گی جو خطرناک ثابت ہو سکتا ہے،یہ باتیں روہنگیا میں ہونے والے وحشیانہ سلوک سے دلبرداشتہ پاک سر زمین پارٹی برطانیہ و یورپ کے صدر چوہدری الطاف شاہد سدھو نے میڈیا کو دیئے گئے اپنے ایک بیان میںکیں،انہوں نے مزید کہا کہ روہنگیا میں مسلمانوں کا قتل عام ایک سوچی سمجھی سازش کے تحت نسل کشی کا منظم منصوبہ ہے کیونکہ یہ سب کچھ ریاست کے ذمہ داروں کی ملی بھگت کا نتیجہ ہے،انہوں نے کہا سب سے زیادہ افسوس دہ بات یہ ہے کہ عالم اسلام کے راہنما ذاتی مفادات کی خاطر بکھرے ہوئے ہیں،اگر اتحاد و اتفاق کا مظاہرہ کیا جائے اور یک آواز ہو کر الٹی میٹم دیا جائے تو کوئی وجہ نہیں کہ عالمی سطح پر شنوائی نہ ہو پھر فی الفور یہ سلسلہ رک سکتا ہے،سب سے پہلے تمام اسلامی ممالک کو میانمار سے فی الفور سفارتی تعلقات منقطہ کر دینے چاہئے اور اقوام متحدہ پر دبائو ڈالیں کہ برما کی فوج براہ راست اس گھنائونے فعل میں ملوث ہے،عالمی عدالت میں اس وحشیانہ قتل کے خلاف مقدمہ چلایا جائے اور ملزمان کو قرار واقعی سزا دی جائے اس وقت تک بین الاقوامی سطح پر اقتصادی پابندی لگانی چاہئے۔خصوصی رپورٹ:فیاض بشیر