مقبول خبریں
اولڈہم کے نوجوانوں کی طرف سے روح پرور محفل، پیر ابو احمد مقصود مدنی کی خصوصی شرکت
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
جو بھی ریفرنس فائل ہو گا، ہم اس کا دفاع کریں گے:وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی
کوئٹہ: وزیر اعظم پاکستان نے صوبائی دارالحکومت میں گورنر بلوچستان اور وزیر اعلیٰ بلوچستان کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج کی میٹنگز میں تین معاملات پر غور کیا گیا، سب سے پہلے صوبے میں امن و امان کی صورتحال پر غور کیا گیا اور اس کی بہتری کیلئے ہر ممکن اقدام اٹھانے کا فیصلہ کیا گیا۔وزیر اعظم نے بتایا کہ دوسرے نمبر پر صوبے میں جاری ترقیاتی منصوبوں پر پیشرفت کا جائزہ لیا گیا اور سابق وزیر اعظم نواز شریف کی حکومت کے شروع کردہ ہر منصوبے کو جاری رکھنے اور مزید پھیلانے کے معاملے پر غور کیا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ ہر ضلع میں گیس کی فراہمی کو یقینی بنانا اور صوبے کے پانی کے مسائل کو حل کرنا اولین ترجیح ہے۔ کچی کینال کا منصوبہ چند روز میں مکمل ہو جائے گا اور صوبے کی ستر ہزار ایکڑ زمین اس سے سیراب ہو گی، چھوٹے ڈیم بھی زیرتعمیر ہیں جو انشاء اللہ جلد مکمل ہو جائیں گے، ٹیوب ویلز کو سولر توانائی پر لائیں گے، ہیلتھ کارڈ سکیم کو ہر ضلع تک پھیلایا جا ئے گا۔وزیر اعظم نے بتایا کہ آج کی میٹنگز میں تیسرے نمبر پر سی پیک کے منصوبوں پر پیشرفت کا جائزہ لیا گیا، یہ منصوبے بھی تیزی سے تکمیل کی جانب بڑھ رہے ہیں اور انشاء اللہ بہت جلد بلوچستان ملک کا امیرترین صوبہ بن جائے گا۔وزیر اعظم نے صحافیوں کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ جو بھی ریفرنس فائل ہو گا، ہم اس کا دفاع کریں گے، اپنا دفاع کرنا ہر ادارے کا حق ہے، صوبوں کو جتنے فنڈز دیئے اس کی کوئی مثال نہیں ملتی، صوبوں کو مکمل رائلٹی ملتی ہے، صوبے آج کسی طرح بھی طرح نقصان میں نہیں ہیں، گیس کے حوالے سے سارے صوبے مثبت جا رہے ہیں۔ وزیر اعظم نے مزید کہا کہ سیاسی جماعتوں میں بات چیت کا سلسلہ جاری رہتا ہے، زرداری صاحب نے موقع کا فائدہ اٹھا کر بیان دیا، انہیں ڈائیلاگ میں شامل ہونا چاہئے۔