مقبول خبریں
چیئرمین کشمیر کمیٹی سید فخر امام سے راجہ نجابت اورحریت رہنماء عبدالحمیدلون کی ملاقات
کرالے میں اوورسیزپاکستانیوں کی میٹنگ،مختلف طبقہ ہائے فکر کے افراد کی شرکت
دعوت اسلامی برمنگھم کے زیر اہتمام خراب موسم کے باوجودجشن عید میلاد النبیؐ کا جلوس
برطانوی شاہی جوڑے کی پاکستان میں زبردست پذیرائی، وزیر اعظم اور صدر مملکت سے ملاقاتیں
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سردار عتیق کی قیادت میں جدوجہد آزادی پایہ تکمیل تک پہنچائیں گے:رہنما ایم سی
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
مقبوضہ کشمیرمظالم:عالمی طاقتوں، اقوام متحدہ کو کردار ادا کرنا ہو گا : ڈاکٹر سجاد کریم
بلقیس بانو زندہ کیوں؟؟؟؟؟
پکچرگیلری
Advertisement
1 منٹ میں ججوں نے نااہل کر دیا، کیا یہ عوام کے مینڈیٹ کی توہین نہیں؟نواز شریف
جہلم: سابق وزیر اعظم نواز شریف نے مشن جی ٹی روڈ کے دوران جہلم میں ایک بڑے جلسۂ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 2013ء میں جب میں آپ کے پاس آیا تھا اس وقت ملک اندھیروں میں ڈوبا ہوا تھا، کارخانے اور ٹیوب ویل بند تھے، دکانیں بند تھیں، سی این جی سٹیشنوں پر لمبی لمبی لائنیں لگی ہوتی تھیں، ملک میں دہشتگردی جاری تھی، میں نے آپ سے وعدہ کیا تھا اور کہا تھا کہ میں جان لڑا دوں گا لیکن اس ملک کو اندھیروں سے نکالوں گا اور ترقی کی جانب لے کر جاؤں گا، بتائیں کیا لوڈ شیڈنگ کم ہوئی ہے یا نہیں؟ اندھیرے ختم ہوئے ہیں یا نہیں؟ دہشتگردی کم ہوئی ہے یا نہیں؟انہوں نے لوگوں کو یاد دلاتے ہوئے کہا کہ جب انہوں نے اقتدار سنبھالا بلوچستان ڈوب رہا تھا، آج وہ پاکستان کی جانب واپس آ رہا ہے، کراچی میں امن ہو گیا ہے، کارخانے چل رہے ہیں اور رہی سہی لوڈ شیڈنگ بھی انشاء اللہ آئندہ برس ختم ہو جائے گی۔نواز شریف نے نااہلی کے فیصلے پر اظہار برہمی کرتے ہوئے کہ پانچ ججوں نے بیک جنبش قلم آپ کے وزیر اعظم کو نااہل کر دیا، کیا یہ آپ کے مینڈیٹ کی توہین ہے یا نہیں۔ انہوں نے کہا کہ ججوں نے خود تسلیم کیا کہ نواز شریف نے کوئی کرپشن نہیں کی پھر قوم کو اور اہل جہلم کو ان سے پوچھنا چاہئے کہ انہوں نے اسے کیوں نااہل کیا؟ انہوں نے ججوں سے استفسار کیا کہ مجھے کیوں نکالا، جب کہ مجھ پر کرپشن کا کوئی ٹھپہ بھی نہیں ہے اور میرا دامن بالکل صاف ہے؟نواز شریف نے کہا کہ جہلم میں والہانہ استقبال پر میرے پاس شکریہ کیلئے الفاظ نہیں ہیں، آج ملک بھر میں موٹرویز کا جال بچھ رہا ہے، قوم کو پوچھنا چاہئے کہ کرپشن نہیں کی تو کیوں نکالا؟ مجھے کیوں نکالا؟ کا سوال اٹھاتے ہوئے نواز شریف جذباتی ہو گئے اور ان کی آواز رُندھ گئی۔ انہوں نے کہا کہ ترقی کا یہ عمل جاری رہتا تو ہر نوجوان کو روزگار مل جاتا، نوجوانوں کا مستقبل روشن ہونے جا رہا تھا، نوجوانو! مایوس نہ ہونا، میں نے اور آپ نے اس ملک کے لئے بہت کچھ کرنا ہے۔