مقبول خبریں
عبدالباسط ملک کے والدحاجی محمد بشیر مرحوم کی روح کے ایصال ثواب کیلئے دعائیہ تقریب
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
میاں جی کی لڑکیاں
پکچرگیلری
Advertisement
شمالی کوریا کا بحرالکاہل میں امریکی جزیرے گوام کو میزائل سے نشانہ بنانے پر غور
پیانگ یانگ: صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی دھمکی کے بعد پیانگ یانگ نے امریکی فوجی اڈے کو نشانہ بنانے پر غور شروع کر دیا۔ شمالی کوریا کا کہنا ہے کہ وہ گوام میں قائم امریکی فوجی اڈے کو میزائلوں سے نشانہ بنا سکتا ہے۔ خیال رہے کہ گوام میں امریکا کے جنگی بمبار طیارے تعینات ہیں۔دوسری جانب امریکی سیکرٹری آف سٹیٹ ریکس ٹیلرسن نے اپنے ایک بیان میں صدر ٹرمپ کی جانب سے شمالی کوریا کو دی جانے والی دھمکی کا دفاع کرتے ہوئے کہا ہے کہ کم جانگ ان کو ڈپلومیٹک زبان سمجھ نہیں آتی، انھیں ایسا سخت پیغام دینے کی ضرورت تھی۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں شمالی کوریا سے فوری کوئی خطرہ درپیش نہیں ہے۔ صدر ٹرمپ صرف پیانگ یانگ پر یہ واضح کرنا چاہتے تھے کہ امریکا اپنا اور اپنے اتحادیوں کا دفاع بھرپور طریقے سے کرنا جانتا ہے۔گزشتہ روز امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے دھمکی دیتے ہوئے کہا تھا کہ شمالی کوریا کو آگ اور غصے کا سامنا کرنا ہو گا، جسے دنیا نے پہلے کبھی نہیں دیکھا ہو گا۔ اس سے قبل اقوام متحدہ نے شمالی کوریا پر مزید پابندیاں عائد کرنے کی قرارداد کو متفقہ طور پر تسلیم کیا تھا جس پر پیانگ یانگ نے اپنی خود مختاری کی متشدد خلاف ورزی سے تعبیر کرتے ہوئے امریکہ کو اس کی قیمت چکانے کی دھمکی دی تھی۔