مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
تنازع کشمیر پر اگر اب جنگ چھڑی تو وہ جوہری ہو گی عالمی برادری تماشائی کا کردار چھوڑ دے
لندن ... 27 اکتوبر 1947 کی یاد میں جب بھارتی افواج نے یلغار کرکے کشمیر کے ایک بڑے حصے پر قبضہ کر لیا تھا ہر سال دنیا بھر میں یوم سیاہ منایا جاتا ہے جس میں مقبوضہ کشمیر کے عوام سے اظہار یکجہتی کیا جاتا ہے۔ برطانوی دارالحکومت میں اس سال بھی بھارتی ہائی کمیشن کے باہر یوم سیاہ منایا گیا جس میں مختلف شہروں سے کشمیری رہنمائوں نے شرکت کی جن میں سابق ایگزیکٹو ڈارئریکٹر کشمیر سنٹر برسلز بیرسٹر مجید ترمبو، آزاد کشمیر سے برطانیہ کے دورے پر آئے ہوئے سابق سینئر وزیر ملک نواز، ممبر کشمیر کونسل چوہدری محمد خاں، مسلم لیگ ن آزاد کشمیر کے برطانیہ میں رہنما زبیر اقبال کیانی، افتخار کھتیاڑوی، راجہ نواز، نفیس سرور، ملک افضل، و دیگر شامل تھے۔ اس موقع پر بھارتی ظلم و ستم کے خلاف شدید نعرے بازی کی گئی۔ مقررین نے کہا کہ کشمیری نصف صدی سے حق خودارادیت کے منتظر ہیں ۔ تنازع کشمیر پر اگر اب جنگ چھڑی تو وہ جوہری ہو گی۔ عالمی برادری تماشائی کا کردار ادا کرنا چھوڑ دے۔ سابق سینئر وزیر اور سینئر نائب صدر مسلم کانفرنس ملک محمد نواز خان نے کہا کہ 66 سالوں سے مسئلہ کشمیر جوں کا توں پڑا ہوا ہے۔ بھارت اس کا فائدہ اٹھاکر کشمیریوں کا قتل عام کررہا ہے۔ دنیا اس ظلم کو روکے اور کشمیریوں کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق موقع دیا جائے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کریں۔