مقبول خبریں
اولڈہم ٹاؤن میں پہلی جنگ عظیم کی صد سالہ تقریب،جم میکمان،مئیر کونسلر جاوید اقبال و دیگر کی شرکت
مشتاق لاشاری سی بی ای کا پورٹریٹ کونسل ہال میں لگا نے کی تقریب، بیگم صنم بھٹو نے نقاب کشائی کی
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مقبوضہ کشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ کا پاک بھارت مذاکرات کی بحالی کا مطالبہ
سرینگر: سابق وزیر اعلیٰ مقبوضہ کشمیر فاروق عبد اللہ نے پاک بھارت مذاکرات کی بحالی سمیت مسئلہ کشمیر پر تیسرے فریق کی ثالثی کا مطالبہ کر دیا ہے۔ میڈیا سے گفتگو میں فاروق عبداللہ کا کہنا تھا کہ تعلقات بحالی کی ذمہ داری نریندر مودی کے بجائے منموہن سنگھ اور ملائم سنگھ جیسی شخصیات کو سونپی جائے۔ادھر فاروق عبد اللہ کے بیان پر بھارت میں شدید رد عمل سامنے آیا ہے۔ بی جے پی کے ترجمان نرسیما راؤ نے کہا کہ فاروق عبداللہ حریت پسندوں اور پاکستان کی زبان بول رہے ہیں۔ انہوں نے کشمیر پر ثالثی کو پاکستان کے سامنے گھٹنے ٹیکنے کے مترادف قرار دیا جبکہ کانگریس نے بھی کشمیر پر کسی تیسری قوت کی ثالثی کو مسترد کر دیا۔