مقبول خبریں
دی سنٹر آف ویلبینگ ، ٹریننگ اینڈ کلچر کے زیر اہتمام دماغی امراض سے آگاہی بارے ورکشاپ
پارٹی رہنما شعیب صدیقی کو پاکستان تحریک انصاف پنجاب کا سیکریٹری جنرل بننے پر مبارک باد
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت جولائی میں برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز،سیمینارز منعقد کریگی
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
اوورسیز پاکستانیز ویلفیئر کونسل کا وسیم اختر چوہدری اور ملک ندیم عباس کے اعزاز میں استقبالیہ
مسئلہ کشمیر کو برطانیہ و یورپ میں اجاگر کرنے پر تحریکی عہدیداروں کا اہم کردار ہے: امجد بشیر
جس لڑکی نے خواب دکھائے وہ لڑکی نابینا تھی!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مسلمان مرد سے تعلقات، غیرت کے نام پر اسرائیلی خاتون کو قتل کر دیا گیا
یروشلم: اسرائیل کی رہائشی ایک 17 سالہ لڑکی کو اس کے والد نے مسلمان مرد سے تعلقات کی وجہ سے قتل کر دیا ہے۔ مقتولہ مذہبی طور پر عیسائی تھی اور اسرائیل قصبے راملی کی رہائشی تھی۔ مقتولہ کے والد سیمی کیرا کو اپنی بیٹی کے مسلمان مرد سے ملاقاتوں اور تعلقات پر سخت اعتراض تھا۔اسرائیلی میڈیا کے مطابق مقتولہ ہینریتی کی والدہ نے پولیس کو دیے گئے اپنے بیان میں کہا ہے کہ اس کا شوہر بہت ذلت محسوس کر رہا تھا، اس لیے اس نے اپنی بیٹی کو قتل کرنے کا فیصلہ کیا۔ اس نے بتایا کہ ہم نے اور خاندان کے دیگر افراد نے بہت کوشش کی کہ ہماری بیٹی مسلمان مرد سے تعلق ختم کر دے لیکن وہ نہیں مانی۔ اس پر تھوڑی سختی کی گئی تو اس نے گھر بار چھوڑ دیا جس کے بعد اسے 13 جون کو قتل کر دیا گیا۔میڈیا کے مطابق گھر سے بھاگنے کے بعد ہینریتی نے مختلف جگہوں پر چھپ کر دن گزارے۔ اپنے قتل سے ایک ہفتہ قبل اس نے اپنے خاندان کے افراد کیخلاف پولیس کو درخواست دی تھی جس میں کہا گیا تھا کہ اس کی فیملی نے اسے تشدد کا نشانہ بنایا۔وقت گزرتا رہا لیکن جیسے ہی مقتولہ ہینرتی نے اپنے ایک رشتہ دار کو بتایا کہ وہ اسلام قبول کرنے جا رہی ہے تو اس کا خاندان اور والد بڑھک اٹھے اور اسے قتل کرنے کا فیصلہ کر لیا۔ ہینرتی کی لاش اس کے گھر کے کچن سے ملی۔ پولیس نے سیمی کیخلاف مقدمہ درج کر کے معاملے کی تفتیش شروع کر دی ہے۔