مقبول خبریں
راچڈیل مساجد کونسل کی طرف سے مئیر کونسلر محمد زمان کی مئیر چیرٹیز کیلئے فنڈ ریزنگ ڈنر کا اہتمام
اوورسیز پاکستانیوں کے لئے خصوصی سیل بنایا جانا چاہئے: سلیم مانڈوی والا
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
برطانیہ میں آباد تارکین وطن کی مسئلہ کشمیر پر کاوشیں قابل تحسین ہیں:چوہدری محمد سرور
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
کشمیریوں کو ان کا حق دیئے بغیر خطے میں پائیدار امن کا حصول ممکن نہیں: راجہ نجابت حسین
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
برطانیہ میں مقیم کشمیری و پاکستانی 16مارچ کو بھارت کے خلاف مظاہرہ کریں گے: راجہ نجابت حسین
وہ بے خبر تھا سمندر کی بے نیازی سے!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
اقلیتوں پر مظالم روکنا محض انسانی حقوق تنظیموں کی نہیں سبکی مشترکہ ذمہ داری ہے: سیمینار
لندن ... برطانوی پارلیمنٹ ہائوس میں ایک خصوصی سیمینار کا اہتمام کیا گیا جس کا مقصد برطانیہ میں مسیحی گروپوں میں حمایت کی کمی پر اظہار تشویش تھا کیونکہ منتظمین کا خیال تھا کہ بعض ممالک میں ایسی صورتحال مسیحی اقلیتوں پر متحرک حملوں کی شکل اختیار کرسکتی ہے۔ لارڈ ایوبری نے اس بات پر زور دیا کہ ایسے تمام پناہ کے درخوست گزار جو مزہبی بنیادوں پر سیٹلمنٹ چاہتے ہوں انہیں انفرادی حیثیت سے اپنا کیس پیش کرنا چاہیئے ناکہ محض یہ کہہ دینا کافی ہے چونکہ ان کا تعلق ایسے مذہبی گروہ سے ہے جس پر آفت آئی تھی۔ لارڈ نذیر احمد نے اپنے خطاب میں افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مذہبی اقلیتیں دنیابھر میں حملوں کا نشانہ بن رہی ہیں۔ قاہرہ اور پاکستان میں یہ مسیحی تھے۔ تاہم برمنگھم اور مڈ لینڈز میں یہ مسلمان تھے جن پر حملے کیے گئے۔ بلیک برن کیتھڈرل کے ڈاکٹر کینن شینن کا کہنا تھا کہ رومن وقتوں میں یہ کہنے کا مطلب کہ میں ایک مسیحی ہوں یقینی موت تھا۔ یہ صورت حال آج بہت سے ممالک میں موجود ہے۔ دنیا کے تمام مذاہب تشدد اور ایذارسانی کی مذمت کرتے ہیں اور یہ ہم میں سے سب کی ذمہ داری ہے کہ کسی بھی مشکل میں ہونے والے مذہبی تشدد کی مذمت کریں اور آفاقی تہذیبی اقدار کے لیے آواز بلند کریں۔ انہوں نے مزید کہا کہ مذہبی کمیونٹیز کی یہ ذمہ داری بھی ہے کہ اپنے ممالک میں جبر و ایزارسانی سے فرار ہوکر آنے والوں کو برطانیہ میں محفوظ جنت فراہم اور ان کی مہمان داری کریں۔ چیئرمین انٹر نیشنل ایسوسی ایشن آف ہیومن رائٹس رباب مہدی رضوی نے کہا کہ کسی شبہ کے بغیر مسیحیوں پر ایذارسانی کی گئی۔ ایپو، شام میں 7000 مسیحیوں کے سر قلم کردئیے گئے تھے۔ برطانوی شہریوں کی حیثیت سے ہمارے لیے یہ ضروری ہے کہ بین الاقوامی اور مقامی سطح پر اپنی ذمہ داری پوری کریں۔