مقبول خبریں
اولڈہم کے نوجوانوں کی طرف سے روح پرور محفل، پیر ابو احمد مقصود مدنی کی خصوصی شرکت
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
اگر ہندو اکھٹے ہو گئے تو 20 کروڑ مسلمانوں کو بھگا دیں گے: برج بھوشن
نئی دہلی: مقبوضہ کشمیر میں امرناتھ یاتریوں پر حملے کے بعد انتہاء پسند ہندو مسلمانوں کیخلاف سخت بیان بازی کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہیں۔ اب بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے ایک ممبر اسمبلی نے مسلمانوں کیخلاف ایک نفرت انگیز ویڈیو بیان دیا ہے جس میں انہوں نے اس تمام واقعے کا ذمہ دار مسلمانوں کو قرار دیتے انھیں ہندوستان سے نکالنے کی دھمکی دیدی ہے۔بی جے پی کے ممبر اسمبلی برج بھوشن عرف گڈو راجپوت نے فیس بک لائیو ویڈیو کے ذریعے اپنے متنازع بیان میں کہا کہ ہندوستان مسلمانوں کا ملک نہیں ہے۔ اگر 100 کروڑ ہندو اکھٹے ہو گئے تو 20 کروڑ مسلمانوں کو ملک سے بھگا دیں گے۔ انہوں نے اپنے مطالبات میں کہا کہ مسلمانوں کو ناصرف حج پر جانے سے روکا جائے بلکہ حج سبسڈی بھی ختم ہونی چاہیے۔ اس کے علاوہ ان کی ریزرویشن کو بھی ختم کیا جائے کیونکہ مسلمان اب اقلیت میں نہیں ہیں، مگر انہیں ریزرویشن کا فائدہ مل رہا ہے۔ بی جے پی کے لیڈر کا کہنا تھا کہ ہندوستان میں رام مندر ضرور بن کر رہے گا۔ اگر مسلمانوں نے مندر بنانے میں رکاوٹ پیدا کی تو ہم انھیں بھی مکہ اور مدینہ نہیں جانے دیں گے۔