مقبول خبریں
راچڈیل کیسلمئیرسنٹر میں کمیونٹی کو صحت مند رہنے،حفاظتی تدابیر بارے آگاہی ورکشاپ کا انعقاد
یورپی پارلیمنٹ میں قائم ’’فرینڈز آف کشمیر گروپ‘‘ کی تنظیم سازی کردی گئی
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت جولائی میں برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز،سیمینارز منعقد کریگی
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
اوورسیز پاکستانیز ویلفیئر کونسل کا وسیم اختر چوہدری اور ملک ندیم عباس کے اعزاز میں استقبالیہ
مسئلہ کشمیر کو برطانیہ و یورپ میں اجاگر کرنے پر تحریکی عہدیداروں کا اہم کردار ہے: امجد بشیر
ہم نے سچ کو دیکھا ہے جھوٹ کے جھروکوں سے!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
اگر ہندو اکھٹے ہو گئے تو 20 کروڑ مسلمانوں کو بھگا دیں گے: برج بھوشن
نئی دہلی: مقبوضہ کشمیر میں امرناتھ یاتریوں پر حملے کے بعد انتہاء پسند ہندو مسلمانوں کیخلاف سخت بیان بازی کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہیں۔ اب بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے ایک ممبر اسمبلی نے مسلمانوں کیخلاف ایک نفرت انگیز ویڈیو بیان دیا ہے جس میں انہوں نے اس تمام واقعے کا ذمہ دار مسلمانوں کو قرار دیتے انھیں ہندوستان سے نکالنے کی دھمکی دیدی ہے۔بی جے پی کے ممبر اسمبلی برج بھوشن عرف گڈو راجپوت نے فیس بک لائیو ویڈیو کے ذریعے اپنے متنازع بیان میں کہا کہ ہندوستان مسلمانوں کا ملک نہیں ہے۔ اگر 100 کروڑ ہندو اکھٹے ہو گئے تو 20 کروڑ مسلمانوں کو ملک سے بھگا دیں گے۔ انہوں نے اپنے مطالبات میں کہا کہ مسلمانوں کو ناصرف حج پر جانے سے روکا جائے بلکہ حج سبسڈی بھی ختم ہونی چاہیے۔ اس کے علاوہ ان کی ریزرویشن کو بھی ختم کیا جائے کیونکہ مسلمان اب اقلیت میں نہیں ہیں، مگر انہیں ریزرویشن کا فائدہ مل رہا ہے۔ بی جے پی کے لیڈر کا کہنا تھا کہ ہندوستان میں رام مندر ضرور بن کر رہے گا۔ اگر مسلمانوں نے مندر بنانے میں رکاوٹ پیدا کی تو ہم انھیں بھی مکہ اور مدینہ نہیں جانے دیں گے۔